Code : 4057 11 Hit

نیتن یاہو کے خلاف مظاہرے نیویارک تک بھی آپہنچے

نیویارک شہر میں مقیم متعدد صہیونیوں نے مقبوضہ فلسطین میں صیہونی وزیر اعظم کے خلاف حالیہ مظاہروں کی حمایت میں مظاہرہ کیا۔

ولایت پورٹل:صیہونی اخبارہارٹیز کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کی ناقص کارکردگی اور بدعنوانی کے مقدمات کے خلاف اسرائیل میں ہونے والے مظاہرے امریکہ تک پہنچ چکے ہیں اور سان فرانسسکو کے بعد اب نیو یارک میں  مظاہروں دیکھنے کو مل رہے ہیں، رپورٹ کے مطابق  نیویارک میں مقیم متعدد اسرائیلیوں نے مینتھن محلہ میں واقع واشنگٹن اسکوائر کے پارک  میں ریلی نکالی جس میں نیتن یاہو کے خلاف نعرے لگائے اور ان سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا۔
رپورٹ کے مطابق  نیتن یاہو مخالف مظاہروں میں شامل شرکاء کی اکثریت نے "پرائم منسٹر" کے لفظ کے بجائے "کرائم منسٹر" لکھے ہوئے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے  جو اسرائیلی پولیس اور پراسیکیوٹر کے دفتر کی طرف سے ان کے خلاف درج تین بدعنوانی کے مقدمات کی طرف اشارہ تھا، اس سے قبل جمعہ کے روز سان فرانسسکو میں گولڈن گیٹ برج کے قریب درجنوں افراد جمع ہوئے اور نیتن یاہو سے وزیر اعظم کے عہدے سے استعفیٰ دینے کا مطالبہ کیا۔
قابل ذکرہے کہ حالیہ ہفتوں میں تل ابیب اور مقبوضہ بیت المقدس سمیت مقبوضہ فلسطین کے متعدد شہروں کے رہائشیوں نے نیتن یاہو کی مغربی کنارے پر 30 فیصد قبضے ، کورونا وائرس سے لڑنے اور بدعنوانی کے مقدمات کے بہانے سکیورٹی فورسز کے اختیارات میں اضافہ سمیت مختلف پالیسیوں کے خلاف متعدد بار احتجاج کیا ہے،درایں اثنا صیہونی ٹیلی ویژن کے 12 چینل نے اتوار کی صبح خبر دی ہے کہ اسرائیلی پولیس کے ایک سینئر عہدیدار نے بند دروازوں کے پیچھے خفیہ میٹنگ میں اعتراف کیا ہے کہ اسرائیل معاشرتی بدامنی کا شکار ہے اور ہو بھی کیسے نہ مظلوم فلسطینی بچوں  کا اگر اس دنیا میں کوئی پرسان حال نہیں ہے تو خدا تو ہے نا اور اس کی لاٹھی میں آواز نہیں ہوتی۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین