Code : 3991 12 Hit

پومپیو نے ٹرمپ کو جنرل سلیمانی کے قتل کا حکم دینے پر اکسایا تھا؛امریکی اخبار کا انکشاف

ایک امریکی اخبار نے امریکی وزیر خارجہ کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے لکھا ہے کہ یہ پومپیو ہی تھے جنہوں نے ٹرمپ کو جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا حکم دینے پر راضی کیا تھا۔

ولایت پورٹل:امریکی اخبار گارڈین کے ڈپٹی ایڈیٹر انچیف اور کالم نگار ، سائمن تسلال نے امریکی وزیر خارجہ مائک پومپیو کے خطرناک موقف کی جانب  متنبہ  کرتے ہوئے کہا کہ یہ پومپیو ہی تھے جنہوں نےامریکی صدر کو جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا حکم دینے پر راضی کیا تھا، گارڈین نے سائمن ٹسڈیل کا لکھا ہوا ایک مضمون شائع کیا ہے جس میں امریکی وزیر خارجہ مائک پومپیو کے بیانات اور عہدوں کی تردید کی گئی ہے، اس مضمون کے ایک حصے میں ، جنرل شہید قاسم سلیمانی کے قتل  کی امریکی دہشت گردانہ اور غیر قانونی کارروائی کا تذکرہ کیا گیا ہے۔
یاد رہے کہ 4 دسمبر ، 2019 کو صبح کے وقت صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حکم پر ہونے والی دہشت گردی کی ایک کارروائی میں امریکی فوج نے بغداد ایئر پورٹ سے رخصت ہونے کے فورا بعد ابو مہدی المہندس اورسردار سلیمانی  سمیت  ان کے متعدد ساتھیوں کو شہید کردیا، گارڈین کی رپورٹ کے مطابق پومپیو نے ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا اس بنیاد پر جواز پیش کیا کہ وہ امریکی مفادات کے لئے خطرہ ہیں۔
سائمن نے مضمون میں لکھا ہے کہ اقوام متحدہ کے خصوصی ریپورٹر ایگنس کلمارڈ نے رواں ماہ اس ہلاکت کو غیر قانونی قرار دیا ہے اور کہا کہ امریکہ کے پاس اس دعوے  کا کوئی ثبوت نہیں ہےجنرل سلیمانی  ریاستہائے متحدہ کے لیے خطرہ تھے، گارڈین کے نائب ایڈیٹر اور کالم نویس نے مزید کہا کہ پومپیو ایران مخالف ایک انتہا پسند ہیں  جو وہ کئی مہینوں سےسردار سلیمانی کو نشانہ بنانے کا مطالبہ کر رہے تھے اور آخر کار ٹرمپ کو انھیں قتل  کرنے کا حکم دینے پر راضی کرنے میں کامیاب ہوگئے۔

1
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین