Code : 1317 51 Hit

فلسطینی جوانوں کی بہادری نے اسرائیل کو کیا جنگ بندی پرمجبور

فلسطینی مقاومت کے جانبازوں اور فلسطینی جوانوں نے ایک بار پھر غاصب اسرائیل کی ناک زمین پر رگڑتے ہوئے گذشتہ ۴۸ گھنٹوں میں ۶۰۰ راکٹ لانچر اسرائیلی حدود میں داغے تھے جس میں کئی اسرائیلی لقمہ اجل بنے ہیں اور ساتھ ہی اس ۳ دن میں فلسطین کے ۲۵ افراد شہید اور ۱۵۰ افراد زخمی ہوگئے ہیں جن میں عورتیں بچے اور بوڑھے بھی شامل ہیں۔

ولایت پورٹل: موصولہ رپورٹ کے مطابق ہفتہ کے دن سے شروع ہونے والی فلسطین و اسرائیل جنگ میں آخرکار فلسطینی جوانوں کی شجاعت و دلیری نے غاصب اسرائیل کو جنگ بندی پر مجبور کردیا ہے۔
فرانس کی سرکاری نیوز ایجنسی کی شائع کردہ رپورٹ کے مطابق فلسطین کی مزحمتی تنظیمیں حماس اور جہاد اسلامی نے غزہ پٹی میں جنگ بندی کے مطالبہ کو قبول کرلیا ہے۔
یاد رہے کہ ۳ دن پہلے ہفتہ کے دن سے غاصب اسرائیل فلسطینوں پر غزہ اور اس کے اطراف میں شدید بم برسا رہا ہے جس کا جواب دیتے ہوئے فلسطینی مزاحمت نے بھی اس کے دانت کھٹے کردیئے جس کے سبب اقوام متحدہ اور مصر نے ثالثی کا کردار ادا کرتے ہوئے دونوں فریق سے جنگ بندی کا مطالبہ کیا تھا۔جسے دونوں فریق نے تسلیم کرلیا ہے۔
یاد رہے کہ جنگ بندی کے معاہدہ پر دستخط کرنے سے پہلے فلسطینی مقاومت نے اسرائیل کے سامنے ایک پیشگی شرط رکھی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ فلسطینی مقاومت اسی وقت اقوام متحدہ و مصر کی ثالثی کو قبول کریں گے جب اسرائیل مکمل طور سے غزہ کے محاصرہ کو ختم کردے۔
فلسطینی مقاومت کے جانبازوں اور فلسطینی جوانوں نے ایک بار پھر غاصب اسرائیل کی ناک زمین پر رگڑتے ہوئے گذشتہ ۴۸ گھنٹوں میں ۶۰۰ راکٹ لانچر اسرائیلی حدود میں داغے تھے جس میں کئی اسرائیلی لقمہ اجل بنے ہیں اور ساتھ ہی اس ۳ دن میں فلسطین کے ۲۵ افراد شہید اور ۱۵۰ افراد زخمی ہوگئے ہیں جن میں عورتیں بچے اور بوڑھے بھی شامل ہیں۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम