ہمارے فضائی دفاعی سسٹم میں ایرانی ڈرونز کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت نہیں؛صیہونیوں کا اعتراف

آج ہفتہ کے روز فوج امور سے مخصوص صہیونی ویب سائٹ "اسرائیل دفاع"نے ایرانی ڈرونز کی صلاحیت اور ان کے خلاف صیہونی حکومت کے فضائی دفاعی نظام کی کمزوری کا اعتراف کیا۔

ولایت پورٹل:العربی الجدید نیوز ایجنسی  نے ’’اسرائیل دفاع ‘‘کے حوالے سے بتایا ہے کہ ایرانیوں نے اسرائیلی فضائی  دفاعی نظام  کے خاتمے کے لئے ایک جارحانہ صلاحیت پیدا کی ہے  جو فوجی طیاروں اور زمینی بنیادوں کے نظام پر مشتمل ہے،صہیونی ویب سائٹ نے مزید بتایا کہ صہیونی حکومت کا فضائی دفاعی سسٹم تین نظاموں پر مشتمل ہے؛ پہلا "ہیتھ" ، دوسرا " فلاخن داوود" اور تیسرا آئرن گنبد ہے ، جو میزائلوں  کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں، تاہم وہ ڈرون سے نمٹنے میں کارگر نہیں ہیں، رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مقبوضہ علاقوں میں متحدہ عرب امارات کے مخصوص فضائی دفاعی نظاموں میں بھی ڈرونز سے نمٹنے کے لئے کوئی مناسب حل نہیں ہے، صیہونی ویب سائٹ نے یہ بھی پیش گوئی کی ہے کہ صیہونی حکومت پر ایران کے حملے کی پہلی لہر ڈرون کے ذریعے کی جائے گی۔
صیہونی نیوز ویب سائٹ کے مطابق  ڈرونز  پہلی بار  میزائل مخالف دفاعی سسٹم کو نشانہ بناسکتے ہیں اور میزائل حملوں کی راہ ہموار کرسکتے ہیں،رپورٹ کے مطابق اگر ایران اپنے ڈرونز حملے اپنی سرزمین ، یمن ، شام اور لبنان سے شروع کرتا ہے تو  اسرائیلی فضائی دفاع کا کام مشکل ہوجائے گا، اسرائیل ڈیفنس نے یہ بھی  کہا کہ زیر زمین بہت سے ایرانی ڈرونز اڈوں کی موجودگی سے صہیونی حکومت کی اس طرح کی کارروائیوں کو ناکام بنانے کی صلاحیت کو کم کردیا گیا ہے، رپورٹ میں اسلامی جمہوریہ ایران کی مسلح افواج کی حالیہ ڈرون مشقوں کا بھی حوالہ دیا گیا ہے اور تسلیم کیا ہے کہ ایران نے پچھلی دہائی میں ڈرونز کی تیاری میں زبردست ترقی کی ہے۔
صہیونی ویب سائٹ نے یہ بھی واضح کیا کہ ایرانی ریورس انجینئرنگ کا استعمال کرتے ہوئے امریکی اور اسرائیلی ڈرون ز کو گرانےکے بعد نئے ڈرون تیار کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں ۔
 

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین