اب وقت آگیا ہے کہ مسلمان اتحاد کے مسئلہ پر سنجیدگی سے غور و فکر کریں: آیت اللہ خامنہ ای

اب وہ وقت آگیا ہے کہ عالم اسلام نظر ثانی کرے۔ اتحاد کے مسئلہ پر سنجیدگی سے غور کرے ، آج امریکہ کی اس علاقہ میں دھمکیاں اور خطرات کسی ایک یا دو ملک کے لئے نہیں ہیں۔ بلکہ یہ خطرہ سب کو لاحق ہے۔ آج امریکی حکومت کی پشت پناہی میں صہیونی حکمرانوں کا منصوبہ کسی ایک علاقہ کو نگلنے پر مبنی نہیں ہے بلکہ وہ سارے علاقے کو نگلنے کی تاک میں ہیں اور آج علی الاعلان اور واضح طور پر یہ کہتے ہیں کہ عظیم مشرق وسطیٰ کا منصوبہ اسی منصوبے کا ایک حصہ ہے۔

ولایت پورٹل: آج جب چاروں طرف سے تفرقہ پھیلانے والے مسلمانوں کی جڑوں کو کاٹنا چاہتے ہیں آج ہر شعور رکھنے والے مسلمان کے دل میں یہ سوال اٹھتا ہے کہ کیا امت اسلامیہ اس دست درازی سے جو منہ زوروں کی جانب سے انجام پاتی ہے مقابلہ نہیں کرسکتی ہے؟
اس کا جواب یہ ہے کہ کیوں نہیں؟ ہم دفاع کرسکتے ہیں، ہمارے پاس اپنی خود مختاری اور حق کے دفاع کے لئے بہت زیادہ وسائل موجود ہیں۔ ہمارے پاس آبادی کا بڑا تناسب موجود ہے، ہمارے پاس بے پناہ دولت ہے، ہم نمایاں لوگوں میں سے ہیں ہمارے  پاس ایسے معنوی سرمائے موجود ہیں جو ہم لوگوں کو طاقتوروں اور منہ زوروں کے مقابلہ میں ڈٹے رہنے کی توانائی عطا کرتے ہیں۔ ہمارے پاس ایسی ثقافت اور تمدن ہے جس کی مثال دنیا میں بہت کم ملتی ہے۔ ہمارے پاس امکانات بہت زیادہ ہیں۔ اس لئے طاقت کے ساتھ دفاع کرسکتے ہیں۔ لیکن ہم دفاع کیوں نہیں کرتے ہیں؟ عملی طور پر میدان میں ہم کچھ کیوں نہیں کرسکتے ہیں؟ کیونکہ ہم آپس میں متحد و متفق نہیں ہیں۔کیونکہ مختلف بہانوں کے ذریعہ ہمیں ایک دوسرے سے الگ تھلک کردیا گیا ہے۔ امت اسلامیہ نام کے عظیم و منظم لشکر کو ایسے گروہوں میں بانٹ کر رکھ دیا گیا ہے، جن کی کوشش بس یہ ہوتی ہے کہ آپس میں ہی مقابلہ کریں ،ایک دوسرے سے خوف کھائیں اور آپس میں ہی لڑتے جھگڑتے رہیں، ایسی صورت میں ظاہر ہے کہ اس لشکر سے کچھ نہیں بن پڑے گا۔
اب وہ وقت آگیا ہے کہ عالم اسلام نظر ثانی کرے۔ اتحاد کے مسئلہ پر سنجیدگی سے غور کرے ، آج امریکہ کی اس علاقہ میں دھمکیاں اور خطرات کسی ایک یا دو ملک کے لئے نہیں ہیں۔ بلکہ یہ خطرہ سب کو لاحق ہے۔ آج امریکی حکومت کی پشت پناہی میں صہیونی حکمرانوں کا منصوبہ کسی ایک علاقہ کو نگلنے پر مبنی نہیں ہے بلکہ وہ سارے علاقے کو نگلنے کی تاک میں ہیں اور آج علی الاعلان اور واضح طور پر یہ کہتے ہیں کہ عظیم مشرق وسطیٰ کا منصوبہ اسی منصوبے کا ایک حصہ ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین