Code : 3501 12 Hit

ہرچیز کھائی نہیں جاتی؛ امریکی پارلیمنٹ اسپیکر کا ٹرمپ کو مشورہ

امریکی سیاست کی سطح اتنی گر چکی ہے کہ جہاں اس ملک کے صدر ڈاکٹر کی اجازت کے بغیر دوا تجویز کرتے ہیں، دوسری طرف امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر صدر کو ’’موٹا‘‘ کہہ کر خطاب کرتی ہیں۔

ولایت پورٹل:سی این این نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق  کورونا وائرس سے نمٹنے کے طریق کار کے سلسلہ میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے نازیبا اظہار خیالات پر  ایک بار پھران کا مذاق اڑایا جارہا ہے۔
یادرہے کہ اس سے قبل ٹرمپ نے مشورہ دیا تھا کہ کرونا سے متاثرہ افراد ڈٹرجنٹ کھا کر دیکھیں اور اس بار کہا ہے کہ میں   ڈاکٹر کے نسخے کے بغیر ملیریا کے علاج کے لئے  موجودہائیڈروکسائکلوروکائن" کی ایک گولی روزانہ کھا رہے ہیں جبکہ ٹرمپ کے دعووں کے برخلاف ، میڈیکل حلقوں کی جانب سے ابھی تک کورونا سے لڑنے میں اس دوا کی تاثیر کی تصدیق نہیں ہوسکی ہے۔
قابل ذکر ہے کہ ٹرمپ کی ان بچگانہ حرکتوں پر امریکی ایوان نمائندگان کی ڈیموکریٹک رہنما نینسی پیلوسی نے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے طنزیہ لہجے میں سی این این کو بتایا کہ تمام تر تنازعات کے باوجود  ٹرمپ ہمارے صدر ہیں  اور میرا انھیں مشورہ ہے کہ وہ چیز کھانے سے پرہیز کریں جس کے لیے ڈاکٹر منع کرتے ہیں خاص طور پراس عمر میں جبکہ ان کا وزن بھی زیادہ ہے اور وہ موٹاپے کا شکار ہیں۔
یادرہے کہ وائٹ ہاؤس کے ڈاکٹر کے مطابق  ٹرمپ کا قد 190 سینٹی میٹر ہے اور ان کا وزن 110 کلوگرام ہے جس کو موٹاپا سمجھا جاتا ہے۔
قابل ذکر ہے کہ ا مریکہ میں کرونا بحران ، ڈیموکریٹس اور ریپبلکن دونوں کے لئے تاوان کا مطالبہ کرنے کا انتخابی ذریعہ بن گیا ہے  اور اس سے پیلوسی اور ٹرمپ کو اپنی دشمنی کو گہرا کرنے کے لئے موقع مل گیا ہے۔
 


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम