افغانستان میں بیشتر صوبوں میں رات کا کرفیو نافذ

افغان وزارت داخلہ نے طالبان کی نقل و حرکت کا مقابلہ کرنے کے لئے ، کابل ، ننگرہار اور پنجشیر کے علاوہ ، ملک کے تمام صوبوں میں رات کا کرفیو نافذ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

ولایت پورٹل:طلوع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق  افغان وزارت داخلہ نے طالبان کی نقل و حرکت کا مقابلہ کرنے کے لئے کابل ، ننگرہار اور پنجشیر کے سوا ملک کے تمام صوبوں میں رات کے دس بجےسے صبح کے چار بجےتک کرفیو  نافذ کرنےکا اعلان کیاہے ، رپورٹ کے مطابق افغان وزارت داخلہ کے نائب ترجمان  احمد ضیاء ضیاء نے کہاکہ طالبان کی نقل و حرکت میں اضافے کو روکنے کے لئے 31 ریاستوں میں رات میں نقل وحرکت پر پابندی عائد کی گئی ہے۔
 انہوں نے مزید کہا کہ یہ پابندی رات دس بجے شروع ہو گی اور صبح چار بجے تک جاری رہے گی ، اس دوران لوگوں کو سفر کرنے کی اجازت نہیں ہوگی، افغانستان کی وزارت داخلہ کے نائب ترجمان نے تینوں صوبوں کابل ، ننگرہار اور پنجشیر کو بھی ان ضوابط سے مستثنیٰ قرار دینے کا اعلان کیا ہے۔
واضح رہے کہ امریکہ نے بیس سال  کی اپنی بے سود موجودگی کے بعد ایسےوقت میں افغانستان سے نکلنے کا اعلان کیا جبکہ افغان فوج اور طالبان کے درمیان شدید جھڑپیں ہورہی ہیں اور طالبان آئے دن کسی نہ کسی علاقہ کو اپنے قبضے میں لے رہے ہیں یہی وجہ کے بعد مبصرین کا کہنا ہے کہ طالبان امریکہ ہی کے اعلی کار ہیں اور اسی کے لیے کام کر رہے ہیں تاکہ وہ خطہ میں امریکی مفادات کو تحفظ فراہم کر سکیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین