Code : 2361 56 Hit

امریکا کو تیل چوری کرنے کی اجازت ہرگز نہیں دیں گے:شام کے پارلیمنٹ ممبر

شام کے پارلیمنٹ ممبر جمال الزعبی نے امریکہ کی اس ملک سے تیل چوری کرنے کی کوششوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ شام کی تمام قومیں میں تیل کے ذخائر پر مکمل کنٹرول حاصل کر لے گی ۔

ولایت پورٹل:شام کے پارلیمنٹ ممبر جمال الزعبی نے اسپوٹنیک ریڈیو کو دیئے جانے والے اپنے ایک انٹرویو میں کہا کہ امریکہ یہ جو شام میں تیل کے ذخائر کی حفاظت کے بارے میں باتیں کر رہا ہے یہ صرف اپنی عزت بچانے کے لئے کر رہا ہے اس لیے کہ اس نے اپنی زیادہ تر فوج یہاں سے نکال لی ہے اب جو فوجی بچے ہیں وہ ہمارے تیل کے ذخائر کی حفاظت نہیں کر سکتے  لیکن امریکہ کو عادت ہے کہ وہ دوسری اقوام کے مفادات کو چوری کرتا رہے لیکن ہم ایسا ہرگز نہیں ہونے دیں گے ہم تیل کے ذخائر کی حفاظت کرنا اچھی طرح جانتے ہیں اس کے لئے ہمیں امریکہ کی ضرورت نہیں ہے،انہوں نے امریکی وزیر دفاع کی دھمکیوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ آپ کی دھمکیاں آپ کے ملک کے اندر ہی چلیں گئی ہمارے ہاں یہ چلنے والی نہیں ہیں،یاد رہے کہ امریکی وزیر دفاع نے کہا تھا کہ ہم شام کے تیل کے ذخائر کو کردمسلح افراد کے ہاتھوں سے لینے کی ہر ممکن کوشش کریں گے اور ہم لے کر رہیں گے،قابل ذکر ہے کہ  حال ہی میں ترکی کی جانب سےکردوں  پر کیے جانے والے حملے میں امریکہ نے کردوں کو میدان میں تنہا چھوڑ دیا اور ٹرمپ نے یہ کہا کہ ترکی اور شام زمین  پر ایک دوسرے سے لڑ رہے ہیں جس کا ہم سے کوئی مطلب نہیں ہے، ٹرمپ نے مزید کہا کرد  اب کافی مضبوط ہوچکے ہیں اور وہ جانتے ہیں کہ کیا کرنا چاہیے جب تک وہ ہمارے ساتھ تھے اور ہماری طرف سے لڑ رہے تھے تو کامیاب ہوئے  اور جب ہمارے بغیر لڑے تو ناکام ہوئے ،ٹرمپ کا کہنا ہے کہ اگر کردوں نے ہمارا ساتھ دیا تو اس کے بدلے میں ہم نے انھیں بھاری رقم دی،الزعبی نے مزید کہا کہ عنقریب شام کی فوج پورے ملک کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے لے گی اور ایسا طریقہ کار اپنائے گی کہ شام متحد د ہوجائے گا ،قابل ذکر ہے کہ حال ہی میں امریکہ کے وزیر دفاع نے اعلان کیا تھا کہ ہم شام میں تیل کے ذخائر کی حفاظت کے لیے مزید فوجی اور جنگی سازو سامان بھیج رہے ہیں تاکہ ان ذخائر پر داعش یا دوسرے گروہوں کا قبضہ نہ ہوسکے یاد رہے کہ مشرقی شام میں موجود تیل کے ذخائر امریکہ کے لیے کافی اہمیت کے حامل ہیں ہیں لہذا وہ ان کو ہتھیانے کے کے در پےہے۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम