Code : 2481 58 Hit

برطانیہ میں جیریمی کوربین کے اقتدار میں آنے سے نیتن یاہو خوف زدہ

صیہونی وزیر اعظم نے برطانیہ کی لبریشن پارٹی کے سربراہ کے صدرتی کرسی پر ممکنہ قبضے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

ولایت پورٹل:برطانوی اخبار ٹیلی گراف اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ  صیہونی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو نے  اشاروں اشاروں میں دھمکی دی ہے کہ اگر برطانیہ میں لبریشن پارٹی کے سربراہ  جیریمی کوربین صدراتی انتخابات میں جیت کر بر سر اقتدار آجاتے ہیں تو صیہونی ریاست برطانیہ کے ساتھ سکیورٹی اور انٹیلی جنس شراکت داری بند کردے گی،ٹیلی گراف نے مزید لکھا ہے کہ  نیتن یاہو سے جب سوال کیا گیا کہ اگر برطانیہ میں جیریمی کوربین  صدر بن جاتے ہیں تو کیا اسرائیل اس ملک کے ساتھ سکیورٹی اور انٹیلی جنس تعاون جاری رکھے گا ؟  جس کے جواب میں انھوں نے تفصیلات بیان کرنے سے انکار کردیا،قابل ذکر ہے کہ  ایسا ہونا عملی طور پر ممکن نہیں ہے کہ کیوں کہ جیریمی کوربین انتخابات میں اپنے حریف بورس جانسن سےپیچھے ہیں اور نیتن یاہو مقبوضہ فلسطین میں انتخابات کے بحران میں پھنسے ہوئے ہیں،تاہم ، کوربن اور نیتن یاہو کے درمیان کشیدگی کوئی ڈھکی چھپی چیز نہیں ہے،نیتن یاہو نے کوربین کو صہیونی دشمن  قرار دیا ہے ، اور کوربین نے بار بار صہیونیوں کے غصے کو بھڑکانے والے بیانات جاری کیے ہیں،قابل ذکر ہے کہ برطانیہ کے  قبل از وقت انتخابات 5 دسمبر کو ہونا ہیں،جانسن نے 8 اکتوبر کو یوروپی یونین سے دستبردار ہونے میں ناکامی کے بعد انتخابات کا مطالبہ کیا تھا ،برطانوی پارلیمنٹ نے جانسن کو یورپی یونین سے استصواب رائے کے نفاذ کے لئے آخری تاریخ میں توسیع کرنے کے لئے کہا تھا جس میں وہ ناکام ہوئے ، برطانوی وزیر اعظم نے عام انتخابات کے انعقاد اور کابینہ کی تشکیل میں تبدیلی  ہونے کے بعد یہ  امید کی ہے کہ وہ برسلز کے ساتھ معاہدے کی منظوری کے لئے درکار ووٹ حاصل کرسکیں  گے  جس کے بعد  یورپی یونین چھوڑنے کے بارے میں اسانی ہو جائے گی۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین