Code : 2961 29 Hit

نیتن یاھو واشنگٹن کی مدد سے مراکش کے ساتھ تعلقات بحال کرنےکی کوشش کر رہے ہیں: اسرائیلی ٹی وی

صیہونی میڈیا کا کہنا ہے کہ صیہونی حکومت امریکہ کی مدد سے مراکش کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کی کوشش کررہی ہے۔

ولایت پورٹل:صہیونی سرکاری ٹیلی ویژن کے چینل 13 نے پیر کی شام اپنی ایک رپورٹ میں کہا  ہے کہ اسرائیل نے گذشتہ سال کے دوران امریکی حکومت کو کئی بار تجویز پیش کی کہ اسرائیل ، امریکہ اور مراکش کے مابین سہ فریقی معاہدہ طے کیا جائے  جس کے تحت امریکہ مغربی صحراؤں میں مراکش کی خودمختاری کو تسلیم اور اس کے  بدلے میں مراکش اسرائیل کے ساتھ تعلقات کو بحال کرے۔
صیہونی چینل کی رپورٹ کے مطابق اس موضوع کا آغاز ڈیڑھ سال قبل ، ستمبر 2018 میں اس وقت ہوا جب اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاھو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں موجود تھے۔
اس اجلاس میں نیتن یاھو نے نیو یارک میں مراکشی وزیر خارجہ ناصر بوریٹا سے خفیہ ملاقات کی۔
یہ ملاقات صہیونی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ بن شبات اور ان کے نائب  موفاز اور مراکشی وزیر خارجہ کے درمیان  ایک خفیہ مواصلاتی چینل کا باعث بنی۔
اس ملاقات کے سہولت کار مراکش کے یہودی بزنس مین یاریو الباز ، جو مراکش کے کھانے پینے کی اشیا کی منڈی کے اہم افراد میں سے ایک ہیں ،بنے۔
یادرہے کہ الباز کے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے داماد اور ان کے مشیر اعلیٰ جیریڈ کوشنز کے ساتھ بہت گہرے تعلقات ہیں یہاں تک کہ جب کوشنز  مراکش کے دورے پر گئے تو الباز کے ساتھ ملنے گئے۔
الباز نے موفاز اور بن شباط کو مراکش کے وزیر خارجہ سے ملوانے کا کام کیا۔
اسرائیلی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ  بن شباط اور موفاز مراکش کے ساتھ اسرائیل کے تعلقات کو بدلنے کے لئے ہ اسرائیل  اور ٹرمپ کےموجود تعلقات کو استعمال کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔




0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम