نیتن یاہو کے بیٹے کا قطر پر دہشتگردی کی حمایت کرنے کا الزام

صیہونی کابینہ تشکیل دینے کی تیاری کرنے والے بنیامین نیتن یاہو کے بیٹے یائر نیتن یاہو نے قطر کے خلاف ایک سخت بیان دیتے ہوئے اس ملک کو دنیا میں دہشت گردی کا نمبر 1 حامی قرار دیا اور اس ملک میں ہونے والے عالمی کپ کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا۔

ولایت پورٹل:ایسی حالت میں کہ جب صیہونی حکام عرب ممالک کے ساتھ سمجھوتہ کرنے والے معاہدوں کو بڑھانے کے لیے اس حکومت کی تیاری کا اعلان کر رہے ہیں، بنجمن نیتن یاہو کے 31 سالہ بیٹے کے قطر کے خلاف تند و تیز بیان نے ہنگامہ کھڑا کر دیا ہے۔
 صیہونی کابینہ تشکیل دینے کی تیاری کرنے والے اور لیکوڈ پارٹی کے سربراہ بنجمن نیتن یاہو کے بیٹے یائر نیتن یاہو نے ایک ٹویٹر پیغام میں قطر کے خلاف سخت موقف اختیار کرتے ہوئے عالمی کپ کی میزبانی کرنے والے ملک کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا۔
واضح رہے کہ خود کوریڈیو میزبان، کالم نگار، قدامت پسند کارکن اور اسرائیل نواز عالمی اسپیکر کہلانے والے یائر نے ایک ٹویٹر پیغام میں دعویٰ کیا کہ قطر دنیا میں دہشت گردی کا سب سے بڑا حامی ہے، ان (قطریوں) کے پاس غلام ہیں، یہ عورتوں پر ظلم کرتے ہیں، ہم جنس پرستوں کو پھانسی دیتے ہیں، وہاں اسلام کے علاوہ کسی اور مذہب جیسے یہودیت، عیسائیت کی پیروی کرنا غیر قانونی ہے، حقیقت یہ ہے کہ یہاں (فٹ بال) ورلڈ کپ کا انعقاد شرمناک ہے، قطر  کا بائیکاٹ ( ضروری ہے۔
یاد رہے کہ یائر نیتن یاہو کا تند و تیز بیان ایک دن بعد سامنے آئے جب ان کے والد نے ریپبلکن جیوش کولیشن کانفرنس میں عرب ممالک کے ساتھ سمجھوتہ کرنے کے اپنے منصوبے کا اعلان کیا اور دعویٰ کیا کہ متعدد عرب ممالک ایران کی دھمکیوں کی وجہ سے اسرائیل کے ساتھ سمجھوتہ چاہتے ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین