نیتن یاہو کی لابی اپنی شکست کی طرف گامزن؛ صیہونی اخبار کا سروے

صیہونی اخبار نے حال ہی میں ایک سروے کیا ہے جس کے نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ اسرائیل میں آنے والے انتخابات میں نیتن یاہو کی لابی کو ہرحال میں شکست کا سامنا کرنا پڑے گا۔

ولایت پورٹل:صیہونی اخبار معاریو کے ذریعہ پیر کی صبح کیے جانے  والے ایک سروے میں اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کی لابی کی طاقت اور اسرئیل میں آنے والے پارلیمانی انتخابات میں حکومت بنانے کے لیے ان کی عدم صلاحیت کو ظاہر کیا گیا ہے تاہم  ان کا اپوزیشن کیمپ بھی 23 مارچ کو ہونے والے انتخابات میں حکومت تشکیل نہیں دے سکے گا۔
واضح رہے کہ اسرائیلی ریڈیو 103 کے ذریعے نشر ہونے والے سروے کے مطابق  اگرابھی انتخابات ہوتے ہیں تو نیتن یاھو کی پارٹی 47 نشستوں پر کامیابی حاصل کرلے گی جبکہ لیکود 28 ، شاس 8  اور یہودیت تورات7 میں ، جبکہ اتحاد مذہبی صہیونیت اور فاشزم 4 نشستیں جیت سکتی ہے،سروے کے نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ یہاں تک کہ اگرنفتالی بنت کی دائیں بازو کی پارٹی جو سروے کے مطابق 11 نشستیں حاصل کر سکتی ہے، نیتن یاہو کے ساتھ اتحاد کر لیتی ہے تب بھی نیتن یاہو کی لابی کنیسیٹ کے 61 ممبروں کی اکثریت تک نہیں پہنچ پائے گی۔
یادرہے کہ  گذشتہ  دوسال کے اندر غیر قانونی صیہونی ریاست میں یہ چوتھا الیکشن ہے اور ہر بار کوئی پارٹی کی حکومت بنانے کے لیے ضروری نشستیں حاصل نہیں کر سکی ہے دوسری طرف صیہونی شہریوں کا کہنا ہے کہ اوپر سے لے کر نیچے تک سب صیہونی حکام بدعنوانیوں  میں ڈوبے ہوئے ہیں ،نیتن یاہو کے خلاف تو دسیوں مقدمات بھی چل رہے ہیں جنہیں آنے والے انتخابات کے بعد تک ملتوی کر دیا گیا ہے ، درایں اثنا یہ کہا جا رہا ہے کہ موجودہ صیہونی وزیر اعظم اگر حکومت نہیں بنا پاتے ہیں تو انھیں جیل میں بھی جانا پڑ سکتا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین