شام میں داعش کے ٹھکانے سے نیٹو کا اسلحہ برآمد

شام کی فوج نے حمص میں داعش کے چار دہشت گردوں کو  ہلاک کرنے کے بعد نیٹو ساختہ اسلحہ پر مشتمل گولہ بارود کا ایک گودام برآمد کیا۔

ولایت پورٹل:روس ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق شام میں روسی فضائیہ کے ترجمان نے صوبہ حمص میں داعش دہشت گرد گروہ کے ممبروں سے تعلق رکھنے والے ہیڈ کوارٹر کو تباہ کرنے کا اعلان کیا، روسی کمانڈر کی رپورٹ کے مطابق یہ کاروائی شامی افواج کی بحالی اور سرچ آپریشن کے بعد چار دہشتگردوں کو ہلاک کرنے کے لیے کی گئی جس میں روسی ڈرونز سےفضائی مدد لی گئی۔
انہوں نے مزید کہا کہ دہشت گردعناصر کے پاس بارود سے بھری ہوئی گاڑیاں تھیں  اور ان کا مشن حمص میں واقع گولہ بارود کے ایک گودام کی حفاظت کرنا تھا،کمانڈر نے بتایا کہ کاروائی کے دوران  شامی فورسز کو داعش کے ہیڈکوارٹر سے مغربی اور نیٹو کے اسلحہ سمیت گولہ بارود کے علاوہ 40 کلوگرام دھماکہ خیز مواد ، ادویات اور کھانے پینے کی اشیا برآمد ہوئیں ۔
انہوں نے بتایا کہ رواں سال کے آغاز سے ہی اس خطے میں دہشت گردوں کی سرگرمیوں میں اضافہ ہوا ہے اور شاید اس صحرائی خطے میں ان کی خفیہ حرکتوں کی وجہ یہ ہے کہ انھیں التنف کے علاقے میں فرار ہونے کا موقع ملا ہے،واضح رہے کہ التنف کے علاقے پر امریکی دہشت گرد قوتوں اور شام کی حکومت کے مخالف دہشت گرد گروہوں کا قبضہ ہے ، جو داعش عناصر کے لئے محفوظ ٹھکانہ سمجھا جاتا ہے۔
ماہرین نے بار بار اس بات پر زور دیا ہے کہ امریکی عناصر داعش دہشت گردوں کو التنف میں فوجی تربیت دے رہے ہیں اور انہیں شام اور عراق کے مختلف علاقوں میں بھیج رہے ہیں جبکہ نیٹو سمیت امریکہ اور دیگر مغربی ممالک اس ملک میں داعش کا مقابلہ کرنے کے بہانے داخل ہوئے تھے تاہم ایسے بہت سارے ثبوت موجود ہیں جن سے یہ ثابت ہوتا ہے ان ممالک میں داعش کے لیے سہلوت کاروں کے فرائض انجام دیے ہیں اور اس ملک پر قبضہ کیا ہوا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین