میانمار فوج کا اسکول پر حملہ؛11 بچے ہلاک

اقوام متحدہ کے بچوں کے فنڈ نے اعلان کیا ہے کہ میانمار کی فوج کے ہیلی کاپٹر کی ایک اسکول پر فائرنگ کے نتیجے میں کم از کم 11 بچے ہلاک ہو گئے۔

ولایت پورٹل:اناطولیہ خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے بچوں کے فنڈ (یونیسیف) نے ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ 16 ستمبر کو میانمار کے فوجی ہیلی کاپٹر کی جانب سے ایک اسکول پر فائرنگ کے نتیجے میں کم از کم 11 بچے ہلاک ہوگئے۔
یونیسیف کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ 16 ستمبر کو میانمار کی فوج کی جانب سے اس ملک کے ساگانگ علاقے میں ایک اسکول سمیت متعدد رہائشی علاقوں پر کیے جانے والے ہوائی حملے کے نتیجے میں کم از کم 11 بچے ہلاک ہو گئے،یونیسیف نے یہ بھی کہا ہے کہ مذکورہ اسکول کے 15 طالب علموں کی صورتحال کے بارے میں ابھی تک کوئی اطلاع نہیں ہے، اس تنظیم نے ان بچوں کی فوری اور غیر مشروط رہائی کا مطالبہ کیا ہے جو ممکنہ طور پر بند ہیں۔
واضح رہے کہ گزشتہ روز میانمار کے مقامی خبر رساں ذرائع نے اطلاع دی تھی کہ ایک سکول پر حملے کے دوران کم از کم 6 بچے ہلاک اور 17 زخمی ہو گئے، یاد رہے کہ حالیہ مہینوں میں میانمار کی فوج کے لوگوں کے خلاف حملوں میں اضافہ ہوا ہے۔
قابل ذکر ہے کہ روہنگیا مسلمان، جو 1982 میں میانمار کی حکومت کی طرف سے ایک قانون کی منظوری کے بعد اپنے شہریت کے حقوق سے محروم ہو گئے اور ایک بے وطن مسلم اقلیت بن گئے، آخر کار 25 اگست 2017 کو میانمار کی فوج نے ان پر حملہ کر کے ان نسل کشی کی نیز انہیں دیگر ممالک میں پناہ لینے پر مجبور کیا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین