Code : 2249 109 Hit

بیمار باپ کے بیمار تخت کے لیے چین ولی عہد

بن سلمان کو ڈر ہے کہ اگر ٹرمپ پھر سے امریکہ کے صدر نہ بن سکے تو سعودی عرب کے بادشاہ نہیں بن سکیں گے۔

ولایت پورٹل:فرانس سے شائع ہونے والے اخبار لوفیگارو نے میں سعودی عرب میں پیش آنے والے حالیہ واقعات کے پیش نظر لکھا ہے یہ واقعات و حادثات اس بات کا سبب بنے ہیں کہ ولی عہد محمد بن سلمان امریکہ میں ہونے والے صدارتی انتخابات سے پہلے مسند شاہی پر بیٹھنے کے بارے میں کوشش کر رہے ہیں ، فرانسوی اس اخبار نے سعودی ولی عہد کو کو لاپروا قرار دیتے ہوئے ہوئے لکھا ہے کہ انہیں اس بات کا خوف ہے کہ موجودہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اگرآئندہ انٹکابات میں کامیاب نہ ہوسکے اور  پھر سے صدر نہ بن سکے  تو کیا ہو گا  وہ کیسے بادشاہ بن پائیں گےلہذا وہ ابھی کوشش کر رہے ہیں کہ امریکہ میں ہونے والےآئندہ  انتخابات سے پہلے ہی اپنے باپ کی کرسی پر بیٹھ جائیں، اخبار میں لکھا ہے کہ محمد بن سلمان اپنے والد سلمان بن عبدالعزیز اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے لطف و کرم کی وجہ سے ترکی میں قائم سعودی سفارت خانے میں قتل ہونے والے صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے مقدمے کی دلدل سے نہایت مشکل سے باہر نکلے ہیں، رپورٹ کے مطابق جہاں محمد بن سلمان نے سعودی عرب میں خواتین  کے حقوق کی حمایت ،انھیں کئی چیزوں کی آزادی اور اجازت دی وہیں  انہوں نے بہت ساری سیاسی اور سماجی کارکن خواتین کو جیل میں بھی ڈال دیا نیز بہت سارے ایسے آمرانہ کام انجام دیے جن کی وجہ سے سعودی عوام خاص طور پر تاجر برادی میں کافی خوف ہراس پایا جاتا ہے، حال ہی میں آرامکو کمپنی پر ہونے والے والے حملے میں میں سعودی اقتصاد کا چہرہ پیلا پڑ گیا اور ولی عہدجس نے کو مزید کمزور کرنے میں اہم رول ادا کیا،فرانس کے اس اخبار میں آگے چل کر لکھا ہے  کہ سعودی بادشاہ کے ذاتی محافظ کو کیوں قتل کیا گیا؟
 اس کے جواب میں لکھا ہے یہ بھی محمد بن سلمان کی جانب سے اپنے 83سال بیمار باپ کو مسند شہنشاہی سے ہٹانے کی سازش ہی کا حصہ ہے ۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम