Code : 2915 51 Hit

اب تو محمود عباس بھی ٹرمپ کے فون کا جواب نہیں دے رہے: صہیونی میڈیا

صیہونی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ جیسے جیسے فلسطین مخالف امریکی صدی ڈیل کے منصوبے کی رونمائی کا وقت قریب آتا جارہا ہے فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمود عباس امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فون کا جواب بھی نہیں دے رہے ہیں۔

ولایت پورٹل:المیادین نیوزچینل نے صیہونی ذرائع ابلاغ کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ مقبوضہ حکومت کے میڈیا کا کہنا ہے کہ گذشتہ دنوں  سےفلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی فون کالز کا جواب  بھی نہیں دیا ہے۔
رپورٹ کے مطابق میڈیا رپورٹس کے مطابق ، ٹرمپ کئی دن سےعباس سے فون پر بات کرنے کے لیے مختلف حربے اپنا رہے ہیں  لیکن فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ کا جواب "نہیں" رہا ہے۔
یادرہے کہ گذشتہ ہفتے امریکی صدر نے صیہونی وزیر اعظم بنیامن نیتن یاہو اور حزب اختلاف کے رہنما رہنما بینی گینٹز کو واشنگٹن کا سفر کرنے اور صدی معاہدے پر تبادلہ خیال کرنے کی دعوت دی۔
ٹرمپ نے آج  اس منصوبے کی نقاب کشائی کا وعدہ کیا ہے۔
نیتن یاہو نے واشنگٹن کے سفر پر جانے سے پہلے کہا  تھامیں امریکی منصوبے کے بارے میں سننے کے لئے واشنگٹن جا رہا ہوں جس کے بعد میرے خیال میں اسرائیل ترقی کرے گا، میں نے کئی بار ڈونلڈ ٹرمپ سے اپنے مفادات اور سلامتی کے بارے میں بات کی ہے، میں ان سے ملاقات کروں گا اور منگل کا دن ایک تاریخ ساز دن ہوگا۔
ادھرجیسے ہی فلسطین مخالف مذکورہ  منصوبے کی تفصیلات منظر عام پر آئیں ، متعددفلسطینی عہدیداروں اور گروپوں نے فلسطینی مقاصد کے ساتھ غداری اور بین الاقوامی قانون نیز اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی کے پیش نظر اس کی شدید مذمت کی۔
قابل ذکر ہے کہ اس منصوبے کے تحت فلسطینیوں کو قدس کے دارالحکومت کے حق سے محروم رکھنے ، صیہونی بستیوں کو اسرائیل میں شامل کرنے اور انھیں تسلیم کرنے نیز فلسطینی مہاجرین کو اپنے گھروں کو واپس جانے کے حق سے محروم رکھنے کے بارے میں آیا ہے۔







0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम