سعودی عرب اور امریکہ کی مشترکہ فضائی مشقیں

سعودی اور امریکی فضائیہ کی جنگی صلاحیتوں کو مضبوط بنانے کے مقصد سے ہونے والی فوجی مشقیں اپنے اختتام کو پہنچیں۔

ولایت پورٹل:سعودی وزارت دفاع نے جنگی صلاحیتوں کو مضبوط بنانے کے مقصد سے سعودی اور امریکی فضائیہ کی فوجی مشقیں ختم کرنے کا اعلان کیا، سعودی وزارت دفاع نے ٹویٹر پر اپنے اکاؤنٹ پر اعلان کیا کہ تجربہ حاصل کرنے اور جنگی طاقت کو بہتر بنانے کے مقصد سے سعودی عرب کے کنگ فہد ایئر بیس پر آپریشن PHEONIX مشقیں کی گئیں۔
 سعودی وزارت دفاع نے اعلان کیا کہ امریکہ کے ساتھ مشقوں میں سعودی فضائیہ کی موجودگی جنگی تیاریوں کو بڑھانے کے کے فریم ورک میں تھی، یہ مشترکہ مشقیں دونوں ممالک کے درمیان اسٹریٹجک تعاون کے فریم ورک میں کی گئی ہیں جن میں سے ایک فوجی تعاون بھی ہے۔
یاد رہے کہ حال ہی میں سعودی شاہی ایئر فورس اور برطانوی سلطنتی ایئر فورس کے درمیان مشترکہ مشقیں کنگ فہد ایئر بیس پر ہوئیں جبکہ گزشتہ ماہ مارچ میں امریکہ اور سعودی عرب کے درمیان مشترکہ فوجی مشقیں عظم عقاب 22 فورٹ کارسن اڈے پر منعقد ہوئیں جو امریکی فوجی تربیتی کیمپوں میں سے ایک ہے،سعودی جوائنٹ آپریشن سینٹر کے ڈائریکٹر ترکی العنزی کی سربراہی میں سعودی مسلح افواج کے ایک گروپ نے اس فوجی مشق میں حصہ لیا۔
واضح رہے کہ واشنگٹن ریاض مشترکہ مشقوں میں کویت، بحرین اور عمان کے فوجی دستوں نے بھی حصہ لیا،سعودی حکام نے دعویٰ کیا کہ ان مشترکہ فوجی مشقوں کا مقصد تعاون کو وسعت دینا نیز خلیج فارس کے عرب ممالک کی مسلح افواج اور امریکی افواج کے درمیان ہم آہنگی کی سطح کو بہتر بنانا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین