Code : 3628 6 Hit

شہر پر فوجی حملہ کی دھمکی دینا غیر قانونی ہے؛سیئٹل کی میئر کی ٹرمپ پر کڑی تنقید

سیئٹل کی میئر نے امریکی صدر کی جانب سے شہر میں فوج بھیجنے کی دھمکی پر سخت تنقید کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ سیئٹل پر فوج کا حملہ غیر قانونی اور غیر آئینی ہے۔

ولایت پورٹل:روٹرز نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق سیئٹل کی میئر جینی ڈورکن نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے  نسل پرستی اورپولیس تشدد کے خلاف مظاہرے کرنے والوں سے نمٹنے کے لئے شہر میں فوج بھیجنے کی دھمکی پر ردعمل ظاہر کیا ہے۔
ڈورکن نے اپنے دفتر میں نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ ٹرمپ کا سیئٹل میں فوج بھیجنا غیر قانونی اور غیر آئینی ہے۔
تاہم اس کی تفصیل نہیں دی گئی کہ سیئٹل کے عہدیداروں نے شہر کے کچھ حصوں پر قبضہ کرنے اور خود مختاری کا اعلان کرنے والے مظاہرین کو منتشر کرنے کا ارادہ کس طرح یا کب کیا ہے۔
سیئٹل کی میئر نے  نیوز کانفرنس میں بتایا کہ سیئٹل میں فوج بھیجنا غیر قانونی اور غیر آئینی ہےنیزسیئٹل پر حملے کا فوری طور پر کوئی خطرہ نہیں ہے۔
ڈورکن نے یہ کہتے ہوئے کہ تمام امریکیوں کو سرکاری عہدہ داروں اور حکومت کو چیلنج کرنے کا حق حاصل ہے،کہا کہ  ہمیں کسی ایسے صدر کی ضرورت نہیں ہے جو غلط فہمیوں اور عدم اعتماد کو فروغ دینے میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہا ہو۔
انہوں نے ٹرمپ پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک بات جو صدر کو سمجھ نہیں آتی ہے  وہ یہ ہے کہ لوگوں کو سننا کوئی کمزوری نہیں بلکہ  یہ ایک طاقت کی علامت ہے اور ایک حقیقی رہنما کے نقطہ نظر سے  ملک گیر مظاہرے اور احتجاجات ریاستہائے متحدہ کے لئے ایک بہتر ملک کی تعمیر کا موقع ہوگا۔
مذکورہ امریکی عہدیدار نے اس بات پر بھی زور دیا کہ وہ واشنگٹن کے گورنر جے انزلی سے بات کریں گی تاکہ اس بات کا یقین کیا جا سکے کہ سیئٹل پر حملہ کرنے کی ٹرمپ کی دھمکی کو ناکام نہیں بنایا جائے گا۔
 
 

 

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین