Code : 2415 54 Hit

اسرائیل اور امریکا کی خفیہ حکومت شام سے امریکی فوج کو نکلنے کی اجازت نہیں دے رہی:مڈل ایسٹ مانیٹر

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ شام سے فوجوں کو نکالنے کے سلسلے میں الجھن کا شکار ہیں اس لیے کہ صہیونی اور امریکہ کی خفیہ حکومت انہیں وہاں سے فوجیں نکالنے کی اجازت نہیں دے رہی ہے۔

ولایت پورٹل:مڈل ایسٹ مانیٹر نے شام کی تازہ ترین صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے یہاں پر اس وقت ہر ملک اور ہر بیرونی طاقت اپنے اپنے فائدے کے پیچھے ہے ، جہاں ترکی نے امن علاقہ قائم کرکے شامی پناہ گزینوں کو وہاں  بسا دیا ہے وہیں  شام کی حکومت نے اکثر علاقوں پر اپنا قبضہ دوبارہ بحال کر لیا ہےاور 2012 کے بعد سے پہلی بار دریائے فرات کو پار کرنے میں کامیاب ہوئی ہے، ایران نے دیکھا کہ شام کی حکومت اپنے سب سے اہم اتحادی حزب اللہ کی وجہ سے سے سرنگوں ہونے سے بچ گئی، روس نے بھی اپنے آپ کو خطے کا اہم ترین اور طاقتور ترین تین ثالث کے عنوان سے پہچنوایا، ٹرمپ نے بھی یہاں پر اپنی فوج میں کمی کر کے الیکشن کے دوران دیے گئے اپنے ایک وعدے کو پورا کیا ،رپورٹ میں مزید آیا ہے کہ اگرچہ ہمیں شمالی شام سے امریکی فوجوں کے انخلاء کے سلسلے میں ٹرمپ کے نظریے میں تبدیلی دیکھنے کو ملی کیوں کہ انھوں نے کہاکہ شام کے تیل کے ذخائر کی حفاظت کے لیے کچھ امریکی فوجی مشرقی شام میں تعینات رہیں گے اور کچھ اردن کی سرحد پر بھی رہیں گے تاکہ اسرائیل کے امن امان کو کوئی خطرہ لاحق نہ ہوسکے ، یہ بھی قیاس آرائیاں   کی جارہی ہیں کہ کچھ امریکی فوجی یہاں سے نکل کر عراق چلے جائیں گے جبکہ عراقی حکومت نے اس کی سخت مخالفت کی ہے ,دوسری طرف پچھلے ہفتے ایک اور رپورٹ منظر عام پر آئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ پانچ سو امریکی فوجی اپنے تمام ساز و سامان کے ساتھ شمالی شام میں واپس پہنچ چکے ہیں  جس کے بعد کہا جارہا ہے کہ شام کے تیل کے ذخائر کی حفاظت کرنے کے سلسلے میں ٹرمپ نے جو کہا تھا تھا اس کے مطابق نو سو امریکی فوجی شام میں باقی رہیں گے, یہاں پر یہ بات یہ بھی قابل غور ہے کہ جب ٹرمپ امریکہ کے صدر بنے تھے اس وقت تقریبا ایک ہزار امریکی فوجی شام میں موجود تھے ،اگرچہ ٹرمپ ایسے آدمی ہیں جن کے بارے میں کچھ نہیں کہا جاسکتا کہ کب کیا کر بیٹھیں لیکن حقیقت یہ ہے کہ امریکی فوج کو میدان جنگ سے واپس بلا نا امریکہ کے کی عوام کا مطالبہ نہیں ہے لیکن ٹرمپ کیوں پریشان ہیں؟ اس کی وجہ یہ ہے کہ امریکی فوجی شام میں داعش کا مقابلہ کرنے کے لیے آئی تھی اب جبکہ اس تنظیم کا سربراہ ابوبکر البغدادی مارا جاچکا ہے تو یہ سوال ذہن میں آتا ہے کہ امریکی فوج اب شام میں کیا کر رہی ہے؟ جس کے جواب میں یہ کہا جارہا ہے کہ امریکہ میں خفیہ حکومت  اور ٹرمپ حکومت میں موجود کچھ لوگ  ان کو یہ فیصلہ نہیں کرنے دے رہے ہیں کہ شام سے فوج واپس آجائے۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम