Code : 2980 41 Hit

رشوت،بم اور سعودی ریال؛ اسرائیل سوڈان دوستی کی کہانی صیہونیوں کی زبانی

ایک صہیونی اخبار نے صہیونی حکومت اور سوڈان کے مابین تعلقات کو "رشوت" ، "بم" اور "سعودی ڈالر" کے تین تصورات پر مبنی قرار دیا ہے۔

ولایت پورٹل:صہیونی اخبار ہارٹز نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ بنیامین نیتن یاہو کی یوگنڈا میں پیر کے روز سوڈان کی حکمراں کونسل کے صدر عبد الفتاح البرہان سے ملاقات میں دونوں فریقوں کے مابین تعلقات کی تاریخ کا ایک اور باب دیکھا گیا۔
ہارٹز نے مزید لکھا ہے کہ ہیرتز نے صہیونی سوڈانی تعلقات کے بارے میں لکھا ہے کہ دونوں فریقوں کی کہانی ؛ اتار چڑھاؤ ، جنگ ، صلح ، عداوت ، اسلحہ کی منتقلی اور انسانی سمگلنگ ، سازشیں ، ایران کا وسیع اثر ، خفیہ بینکاری اور سب سے بڑھ کر خفیہ تعلقات پر مبنی ہے۔
یادرہے کہ دونوں فریقوں کے مابین تعلقات کا پہلا باب پہلی 1950کی دہائی  میں لکھا گیا تھاجب  سوڈان برطانوی اور مصری حکومتوں سے آزادی کی مانگ  کر رہا تھا۔
اس وقت سوڈان  کی  امہ پارٹی کے نمائندوں نے صادق المہدی کی سربراہی میں ، جو تیس سال بعد سوڈان کے وزیر اعظم بنے تھے ، خفیہ طور پر لندن میں اسرائیلی سفارت کاروں سے ملاقات کی۔
جنوری 1965میں سوڈان نے آزادی حاصل کی اور برطانوی اور مصری حکومتوں نے اسے تسلیم کرلیا۔
جس کے بعد کئی سالوں سے اسرائیلی عہدیداروں سے خفیہ ملاقاتیں کرنے کا کام اسرائیلی وزارت خارجہ سے موساد میں منتقل کردیا گیا۔
1950کی دہائی کے آخر میں سوڈان اور صیہونی حکومت کے مابین تعلقات منقطع ہوگئے ۔
سوڈان میں فوجی بغاوت کے آغاز سے ہی سوڈان کو صیہونی حکومت کا دشمن بنا دیا گیا یہاں تک کہ اسرائیل اور عربوں کے درمیان ہونے والی چھ روزہ  جنگ کے دوران سوڈان نے مصر کی مدد کے لئے ایک فوجی بھی دستہ بھیجا۔
ہارٹز کے مطابق اسرائیل نے اس قاعدہ کے ساتھ سوڈان کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھایا ہے کہ میرے دشمن کا دشمن  بھی میرا دوست ہے۔


 


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम