اسرائیل کا مستقبل خطرے میں ہے؛صیہونی وزیر اعظم کی دہائی

صیہونی حکومت میں سیاسی بحران کے بعد نفتالی بینیٹ نے اعتراف کیا کہ صیہونی حکومت کا مستقبل خطرے میں ہے۔

ولایت پورٹل:صیہونی حکومت میں سیاسی کشیدگی اور بدامنی میں اضافے کے بعد اس غیر قانونی ریاست کے وزیر اعظم نفتالی بینیٹ نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر فلسطینی عوام اور اس کے اتحادیوں کے خلاف صیہونی مظالم کو نظر انداز کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ اس وقت اتحاد چھوڑنا غلط ہے، ہمیں فلسطینی دہشت گردی کا مقابلہ کرنا چاہیے اور اسے شکست دینا چاہیے کیونکہ اسرائیل کا مستقبل خطرے میں ہے۔
واضح رہے کہ مورٹیز پارٹی سے تعلق رکھنے والی کنیسٹ کی رکن غیداء زعبی نے گذشتہ جمعرات کو مقبوضہ بیت المقدس میں بڑھتی ہوئی جھڑپوں اور الجزیرہ کی معروف صحافی شیرین ابوعاقلہ کی شہادت کے خلاف احتجاجاً استعفیٰ دے دیا۔
اتحادی حکومت سے غیداء زعبی کے استعفیٰ کے بعد، لیکوڈ پارٹی نے اعلان کیا کہ وہ نفتالی بینٹ لاپڈ (موجودہ وزیر خارجہ اور مستقبل کے اسرائیلی وزیر اعظم یائر لاپڈ) کی کابینہ پر عدم اعتماد کی تحریک اور تحلیل کرنے کا بل کنیسٹ میں پیش کرے گی تاکہ قبل از وقت انتخابات کروائے جاسکیں۔
اس حوالے سے صہیونی ذرائع نے بتایا کہ اسرائیلی کابینہ کے خاتمے کے امکان کے باعث جوبائیڈن کا مقبوضہ علاقوں کا دورہ منسوخ ہونے کا امکان ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین