Code : 2460 87 Hit

آل سعود کا ایران پر جوہری پروگرام میں دھوکہ دہی کا الزام

سعودی وزرا کی کابینہ نے دعوی کیا کہ ایران نے اپنے جوہری پروگرام کے بارے میں بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کو ضروری معلومات فراہم نہیں کی۔

ولایت پورٹل:سعودی سرکاری نیوز ایجنسی (واس)نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ شاہ سلمان کی موجودگی میں سعودی کابینہ کےہفتہ وار اجلاس میں ایران پر جوہری پروگرام میں دھوکہ دہی کا الزام عائد کیا گیا ہے،رپورٹ میں مزید آیا ہے کہ اجلاس میں خطے اور دنیا کی تازہ ترین صورت حال  کے بارے میں رپورٹس کا جائزہ لیتے ہوئے یہ اعلان کیا گیا کہ سعودی حکومت بین الاقوامی  کی جانب سے کی جانےوالی کوششوں کی قدر دانی کرتی ہے  اور ایران کی جانب سے اپنے ایٹمی پروگرام میں دھوکہ دینے اور ایجنسی  کو ضروری معلومات فراہم کرنے میں تاخیر کرنے کی کوششوں کی مذمت کرتی ہے،سعودی حکومت نےایران سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے ساتھ مکمل تعاون  کرے اور ایجنسی  ماہرین کے استثنیٰ اور مراعات کا احترام کرے،سعودی وزرا کی کابینہ نے بین الاقوامی ایجنسی سے بھی مانگ کی ہے کہ وہ ایران کے ایٹمی پروگرام پر نگرانی میں شدت لائے اور اس میں مزید باریک بینی سے کام  لے،یادرہے کہ پچھلی جمعرات کو اقوام متحدہ میں سعودی عرب کے مندوب عبداللہ بن خالد بن سلطان عبد العزیز نے بھی اپنے ایک بیان میں ایران پر الزام لگایا تھا کہ وہ اپنے جوہری پروگرام کے حساس حصوں کو چھپا رہا ہے اور دھوکہ دہی سے کام لیتے ہوئے ایٹمی ہتھیار بنانے کی کوشش کررہا ہے،قابل ذکر ہے سعودی حکام نے تہران سے بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے ماہر کو نکالے جانے پر ہنگامہ آرائی کی ہے جس کے سلسلہ میں ایران کی ایٹمی ایجنسی کا کہنا ہے کہ مذکورہ شخص جیسے نطنز میں  داخل ہوا  وہاں لگے ہوئے خطرہ کے الارم بجنے لگے جس کی وجہ سے انھیں وہاں جانے کی اجازت نہیں دی گئی  اور ایران نے ایجنسی کو اس کی رپورٹ پیش کر دی ہے۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम