جارح سعودی اتحاد کی یمنی پناہ گزین کیمپوں پر بمباری

صوبہ مأرب کی انسانی حقوق کی اعلیٰ کونسل نے یمنی پناہ گزین کیمپوں کے خلاف سعودی جارحیت پسند اتحاد کے فضائی حملوں کی خبر دی ہے۔

ولایت پورٹل:المسیرہ چینل کی رپورٹ کے مطابق یمن کے صوبہ مأرب کی انسانی حقوق کی اعلیٰ کونسل نے صرواح کے زنہ علاقے میں مہاجر کیمپوں پر سعودی جارحیت پسند اتحاد کے حملوں کی خبر دی، کونسل نے کہا کہ حملہ آوروں نے چھ فضائی حملوں کے دوران پناہ گزینوں کے دو کیمپوں پر بمباری کی، رپورٹ کے مطابق  سعودی جارحیت پسند اتحاد کا کیمپوں پر حملوں کا مقصد یمنی پناہ گزینوں کو خوف زدہ کرنا اور انہیں سعودی اتحادی فوج کے زیر کنٹرول علاقوں میں جانے پر مجبور کرنا تھا۔
واضح رہے کہ جارحیت پسند اس اقدام کے ساتھ  یمن کے مہاجرین کو انصاراللہ افواج کے خلاف جنگ میں انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کی کوشش کرہے ہیں،جبکہ جن کیمپوں پر حملہ کیا گیا ہے ان میں 800 سے زیادہ یمنی خاندان رہتے ہیں جوپچھلے پانچ سالوں سے اس علاقے میں رہائش پذیر ہیں ،یادرہے کہ حالیہ برسوں میں یمن کے صوبہ مأرب میں حملہ آور سعودی نے 40000 سے زیادہ فضائی حملے کیے ہیں جس کی وجہ سے ہزاروں یمنی خاندان بے گھر ہوگئے ہیں نیز اس صوبے کا بنیادی ڈھانچہ بھی تباہ ہوگیا ہے اور جبکہ یمنی عوام اور فوج اس صوبہ کو جارحین کے چنگل سے نکال پر وطن کی آغوش میں لانے کی کوشش کر رہے ہیں تو عربی اور مغربی میڈیا میں  ان کے خلاف وسیع پیمانے پر پروپگنڈہ کیا جارہا ہے اور کہا جا رہا ہے اس اقدام سے یمنی عوام کا قتل عام ہو جائے گا جبکہ پچھلے چھ سالوں سے سعودی اتحاد کے حملوں میں خواتین اور معصوم بچوں کے قتل عام کا کوئی نام تک نہیں لے رہا ہے اور جب یمنی اپنا دفاع کر رہے ہیں تو سب کو انسانی حقوق یاد آگئے ہیں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین