Code : 3978 16 Hit

آیات و روایات کی روشنی میں ذی الحجہ کے ایام سب سے پاکیزہ اور عظمت والے ایام ہیں: مرحوم آیت اللہ تہرانی

رسول اللہ(ص) نے ارشاد فرمایا: اللہ کی نظر میں ماہ ذی الحجہ کے پہلے عشرہ سے بڑھ کر پاکیزہ ترین اور عظیم ترین ایام کوئی دوسرے نہیں ہیں ۔سرکار رسالتمآب(ص) سے سوال کیا گیا :یا رسول اللہ! کیا یہ ایام راہ خدا میں جہاد کرنے سے بھی زیادہ فضیلت کے حامل ہیں؟ تو ارشاد ہوا: ان ایام میں انسان جو اعمال بجا لاتا ہے ان کی اہمیت و فضیلت اللہ کی راہ میں جہاد کرنے سے بھی زیادہ ہے مگر یہ کہ کوئی شخص راہ خدا میں جہاد کرنے کے لئے اپنی جان ، مال اور اپنی تمام چیزیں لے جائے اور ان میں سے کوئی ایک بھی واپس نہ آئے ۔یعنی نہ اس کی جان بچے اور نہ اس کا مال، اگر اس طرح اس نے جہاد کیا ہے تو پھر وہ جہاد ان ایام سے افضل ہوسکتا ہے ۔

ولایت پورٹل: مرحوم آیت اللہ مجتبیٰ تہرانی نے اپنے ایک درس اخلاق میں اس مہینہ کی عظمت پر روشنی ڈالتے ہوئے فرمایا تھا کہ :ذی الحجہ کا مہینہ ان اہم اور گرانقدر مہینوں میں سے ایک ہے جسے اللہ تعالیٰ نے مؤمنین کے لئے تزکیہ نفوس کی سب مناسب فرصت قرار دیا ہے۔ اس مہینہ کا تذکرہ جہاں قرآن مجید میں ہوا ہے وہیں بہت سی روایات میں آئمہ طاہرین(ع) نے اس کی فضیلت اور اہمیت پر روشنی ڈالی ہے چنانچہ ایک حدیث میں ہمارے چھٹے امام حضرت صادق آل محمد(ع) نے سورہ بقرہ کی ۲۰۳ ویں آیت :’’ وَ اذْكُرُوا اللَّهَ فی‏ أَیَّامٍ مَعْلومات ‘‘اور سورہ حج کی ۲۲ ویں آیت :’’ وَ اذْكُرُوا اللَّهَ فی‏ أَیَّامٍ مَعْدُودات ‘‘۔(یعنی خداوند عالم کو مخصوص اور معین دنوں میں یاد کرو) کی تفسیر میں ارشاد فرمایا ہے :’’ أَیَّامُ التَّشْرِیقِ الثَّلَاثَةُ، وَ الْأَیَّامُ الْمَعْلُومَاتُ الْعَشَرَةُ مِنْ ذِی الْحِجَّة‘‘۔کہ پہلی  آیت میں ’’ایام معدودات‘‘ سے مراد ماہ ذی الحجہ کی ۱۱، ۱۲ اور ۱۳ ویں تاریخیں  ہیں جبکہ ’’ایام معلومات‘‘ سے مراد ماہ ذی الحجہ کی پہلی تاریخ سے لیکر ۱۰ ویں تاریخ تک کے ایام مراد ہیں۔ (تفسیر قمی، ج1، ص71)
مرحوم آیت اللہ مجتبیٰ تہرانی نے اس مہینہ کی فضیلت کے متعلق رسول اللہ(ص) کی اس حدیث کو نقل کیا:’’ مَا مِنْ أَیَّامٍ أَزْکَى عِنْدَ اللَّهِ تَعَالَى وَ لَا أَعْظَمَ أَجْراً مِنْ خَیْرٍ فِی عَشْرِ الْأَضْحَى، قیل وَ لَا الْجِهَادُ فِی سَبِیلِ اللَّهِ؟ قال: وَ لَا الْجِهَادُ فِی سَبِیلِ اللَّهِ إِلَّا رَجُلٌ خَرَجَ بِمَالِهِ وَ نَفْسِهِ ثُمَّ لَمْ یَرْجِعْ مِنْ ذَلِكَ بِشَیْ‏ء ‘‘۔
رسول اللہ(ص) نے ارشاد فرمایا: اللہ کی نظر میں ماہ ذی الحجہ کے پہلے عشرہ سے بڑھ کر پاکیزہ ترین اور عظیم ترین ایام کوئی دوسرے نہیں ہیں ۔سرکار رسالتمآب(ص) سے سوال کیا گیا :یا رسول اللہ! کیا یہ ایام راہ خدا میں جہاد کرنے سے بھی زیادہ فضیلت کے حامل ہیں؟ تو ارشاد ہوا: ان ایام میں انسان جو اعمال بجا لاتا ہے ان کی اہمیت و فضیلت اللہ کی راہ میں جہاد کرنے سے بھی زیادہ ہے مگر یہ کہ کوئی شخص راہ خدا میں جہاد کرنے کے لئے  اپنی جان ، مال اور اپنی تمام چیزیں لے جائے اور ان میں سے کوئی ایک بھی واپس نہ آئے ۔یعنی نہ اس کی جان بچے اور نہ اس کا مال، اگر اس طرح اس نے  جہاد کیا ہے تو پھر وہ جہاد ان ایام سے افضل ہوسکتا ہے ۔
لہذا اس روایت کے تناظر میں ان ایام کی اہمیت و فضیلت کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے ۔

مرحوم آیت اللہ مجتبیٰ تہرانی(رح) کے ایک درس اخلاق سے اقتباس
 


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین