Code : 3999 4 Hit

رواں سال کے پہلے چھ ماہ میں صیہونیوں کے ہاتھوں 27فلسطینی شہید، 1070 زخمی اور 2000 سے زیادہ گرفتار ہوئے ہیں؛فلسطینی تحقیقاتی مرکز کی رپورٹ

صیہونی حکومت کے ہاتھوں رواں سال کے پہلے چھ مہینوں میں 27 فلسطینی شہید اور 1070 دیگر زخمی ہوئے ہیں۔

ولایت پورٹل:فلسطینی نیوز ایجنسی وفا کی رپورٹ کے مطابق فلسطین لبریشن آرگنائزیشن (پی ایل او) سے وابستہ  عبد اللہ الحورانی ریسرچ سنٹر نے 2020 کے پہلے چھ ماہ میں فلسطینیوں کے خلاف صہیونی جارحیت کو بیان کرنے والی ایک رپورٹ شائع کی ہے جس میں آیا ہے کہ رواں سال کے پہلے نصف حصے میں ، قابض اسرائیلی  حکومت نے درندگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے سات بچوں اور دو خواتین سمیت 27 شہریوں کو گولی مار کر شہید کیا ہے جبکہ  1070  کو زخمی اور 2330 افراد کو حراست میں لیا ہے۔
رپورٹ کے مطابق  صہیونی حکومت نے ان چھ ماہ کے دوران 357 مکانات اور مراکز تباہ کیے ہیں  جن میں زیادہ تر مقبوضہ الخلیل اور مقبوضہ یروشلم صوبوں  میں تھے،رپورٹ میں مزید آیا ہے کہ اس سال کی پہلی ششماہی میں ، صیہونی حکومت کے عہدیداروں نے مغربی کنارے اور مقبوضہ بیت المقدس میں ہزاروں صہیونی یونٹ بنانے کا منصوبہ بھی پیش کیا ہے جس میں صیہونی  وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کا یہ حکم بھی شامل ہے کہ اس علاقے میں "E1" کے نام سے 3500 صہیونی یونٹ تعمیر کریں جو مغربی کنارے کے شمال اور جنوب کے درمیان واحد مواصلاتی راستہ ہے۔
اس کے علاوہ ان چھ ماہ میں   9491 صیہونی آباد کار ، پولیس اور صیہونی  کنسٹ کے ممبران غیرقانونی طور پر مسجد اقصیٰ میں داخل ہوئے ہیںاور مسجد اقصیٰ سے فلسطینیوں کو بے دخل کرنے کے درجنوں احکامات جاری کردیئے گئے ہیں تاہم صیہونیوں کے ان اقدام کے خلاف کسی بھی عالمی تنظیم کے کان پر جوں تک نہیں رینگی بلکہ بہت سارے عرب حکمرانوں کو فلسطین کو صیہونیوں کے حوالہ کرنے کی خود صیہونیوں سے بھی جلدی ہے اس لیےکہ وہ اپنے تخت وتاج کی بقا اسی میں سمجھتے ہیں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین