Code : 2612 47 Hit

سعد الحریری ہوں گے نئے لبنانی وزیر اعظم

حزب اللہ اور امل تحریک کی حمایت کے بعد سعد الحریری کو کل لبنان کی پارلیمنٹ اجلاس میں کابینہ کے وزیر اعظم کی حیثیت سے کابینہ تشکیل دینے کی دعوت دیے جانے کا امکان ہے۔

ولایت پورٹل:سعودی اخبار الشرق الاوسط کی رپورٹ کے مطابق لبنانی پارلیمنٹ سےکے اجلاس میں  صرف ایک دن باقی بچا ہے اور سب کی نگاہیں پارلیمنٹ  کے مشاورتی عمل پر ٹکی ہوئی ہیں تا کہ نئے وزیر اعظم کے نام کا اعلان ہوسکے،رپورٹ کے مطابق وزیر اعظم کے انتخاب کے بارے میں پارلیمانی اتحاد وں کی رائے  معلوم  نہیں لیکن سعد الحریری کا نام پراکثریت کا اتفاق ہے،رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ لبنان کے وزیر خارجہ جبران باسل کے اعلان  کیا ہے کہ جس حکومت کے سربراہ الحریری ہوں گے وہ اس میں شریک نہیں ہوں گے جبکہ حزب اللہ کے سکریٹری جنرل حسن نصراللہ نے پارلیمنٹ میں ان کی  تحریک سے وابستہ اتحاد کے ذریعہ الحریری کو منتخب کیے جانے کی طرف اشارہ کیا ہے ،ادھر القوات اللبنانیہ پارٹی کے سربراہ نے  سابق وزیر غطاس سے الحریری کے ایلچی کی حیثیت سے ملاقات کی جس کے بعد انھوں نے کہا کہ  وہ حکومت میں شریک نہیں ہوں گے اور الحریری کو انتخاب کرنے یا نہ کرنے کے فیصلہ کو اپنی پارٹی الجمهوریه القویه پر چھوڑدیا ہے،اسی سلسلہ میں الشرق الاوسط کو باخبر ذرائع نے بتایاکہ لقوات‌ اللبنانیه پارٹی کی حمایت بھی الحریری ہی کو حاصل ہے،انھوں نے سمیر جعجع کا حوالہ دیتے ہوئے کہ انھوں نے کہا ہے کہ اگر ہم الحریری مسترد کرتے ہیں تو ہمیں  صدرمیشل عون  اور پارلیمنٹ اسپیکر نبیہ بری کو بھی مسترد کرنا پڑے گا،مذکورہ اخبار نے نصراللہ کے مؤقف کو بھی بیان کرنے کا  دعوی کرتے ہوئے کہا ہے کہ حزب اللہ اور امل تحریک کا ووٹ بھی الحریری ہی کو ہے اس لیے کہ  نصراللہ نے اپنی تقریر میں اس بات کی نشاندہی کی ، جب انہوں نے کہا ، "اس کے دو آپشن ہیں: یا تو الحریری کی تقرری کرنا یا اس کی جگہ کسی اور کو لے لینااب جبکہ  پارلیمنٹ کےاجلاس شروع ہونے سے چند گھنٹے قبل تک کسی کو نامزد نہیں کیا گیا تو اس کا مطلب یہ ہے کہ ان کی حمایت بھی الحریری ہی کو حاصل ہے۔
 



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین