ٹرمپ سے ملنے والی دستاویزات میں اہم انکشاف

متعدد امریکی صحافیوں نے دعویٰ کیا کہ ٹرمپ کی رہائش گاہ سے دریافت ہونے والی جوہری ٹیکنالوجی کی دستاویزات سعودی عرب کو فروخت کرنے کے لیے تھیں۔

ولایت پورٹل:سوشل میڈیا پر محمد بن سلمان کے مخالف پیجز میں سے ایک المفتاح نے امریکی صحافیوں کے بیانات کا حوالہ دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ ایف بی آئی کے اہلکاروں نے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی رہائش گاہ سے جو خفیہ دستاویزات قبضے میں لیں وہ سعودی عرب کو فروخت کی جانے والی جوہری ٹیکنالوجی سے متعلق ہیں۔
 اس صفحہ کے مطابق متعدد امریکی صحافیوں نے اپنے سابقہ مضامین کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا کہ اس سے قبل انہوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کے دور صدارت میں سعودی عرب کو حساس جوہری ٹیکنالوجی سے متعلق معلومات کی منتقلی کو بے نقاب کیا تھا جس سے محمد بن سلمان اور ٹرمپ کے داماد جیرڈ کشنر کے درمیان مالی عدم شفافیت کے تعلقات  واضح ہوئے تھے۔
ان صحافیوں کے مطابق اس حوالے سے محمد بن سلمان کا کشنر کی کمپنی میں 2 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری پر سوالیہ نشان  ہے اس کے علاوہ، کچھ امریکی صفحات اس سے قبل امریکی ایوان نمائندگان کی 2019 کی رپورٹ شائع کر چکے ہیں جس میں بتایا گیا تھا کہ انہوں نے ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے سعودی عرب کو حساس جوہری ٹیکنالوجی منتقل کرنے کی کوشش پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین