Code : 1686 54 Hit

امام جعفر صادقؑ نے اپنے علم کے ذریعہ حکومت وقت کو تہی دست بنا دیا تھا:رہبر معظم

رہبر معظم کا کہنا ہے کہ امام صادق علیہ السلام اسلامی فقہ اور معارف کے درس اور تفسیر قرآن کے بیان کے ذریعہ عمی طور پر اس وقت کی حکومت کے خلاف مقابلہ کے لئے کھڑے تھے۔

ولایت پورٹل:رہبر معظم کا کہنا ہے کہ  امام صادق علیہ السلام علمی بساط پھیلا کر اور حکومت سے وابستہ علماء سے ہٹ کر اسلامی فقہ اور معارف کے درس اور تفسیر قرآن کے بیان کے ذریعہ عملاً اس حکومت کے خلاف مقابلہ کے لئے کھڑے تھے،امام صادق علیہ السلام اس ذریعہ سے ان تمام مذہبی مشینری اور سرکاری فقہاء کا، جو خلفاء کی حکومت کا ایک اہم ترین شعبہ شمار ہوتے تھے، راستہ روکتے اور حکومت کو اس کے مذہبی پہلو میں تہی دست بنا دیتے تھے،امام صادق علیہ السلام کے زمانے میں حکومتی فقہاء کے مقابل فقہ جعفری فقط ایک سادہ دینی عقیدہ کا اختلاف نہیں تھی بلکہ وہ بیک وقت اپنے ساتھ دو مخالفانہ باتوں کی بھی حامل تھی: پہلی اور اہم ترین بات حکومت کے دینی شعور سے بے بہرہ ہونے اور لوگوں کے فکری امور کو حل کرنے میں اس کی ناتوانی کا اثبات تھا (یعنی درحقیقت منصبِ خلافت کے لئے ان کی نااہلی کو ثابت کرنا) اور دوسری بات سرکاری  طور پر فقہ میں کی جانے والی تحریفات کو سامنے لانا تھی جس کی وجہ فقہی احکام کے بیان میں فقہاء کی مصلحت اندیشی اور حکمرانوں کی خواہش اور ان کے حکم کو پیش نظر رکھنا تھی،امام صادق علیہ السلام  علمی بساط پھیلا کر اور حکومت سے وابستہ علماء سے ہٹ کر اسلامی فقہ اور معارف  کے درس اور تفسیر قرآن کے بیان کے ذریعہ عملاً اس حکومت کے خلاف مقابلہ کے لئے کھڑے تھے، امام صادق علیہ السلام اس ذریعہ سے ان تمام مذہبی مشینری اور سرکاری فقہاء کا، جو خلفاء کی حکومت کا ایک اہم ترین شعبہ شمار ہوتے تھے، راستہ روکتے اور حکومت کو اس کے مذہبی پہلو میں تہی دست بنا دیتے تھے۔
تسنیم


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम