Code : 2331 111 Hit

بچوں کےساتھ امام حسن(ع) کے کرم کا ایک نمونہ

امام حسن علیہ السلام نے ان بچوں کی ضیافت کرکے فرمایا:یں نے انہیں کھانا کھلایا اور کپڑے دیئے لیکن پھر بھی ان کی بخشش اور سخاوت میری مہمان نوازی پر بھاری ہے چونکہ ان کے پاس اس وقت جو کچھ بھی تھا انہوں نے سب کچھ میرے سامنے لاکر رکھ دیا اور ہم نے انہیں اپنے گھر میں رکھے ہوئے میں سے کچھ دیا ہے جبکہ ہمارے گھر میں ابھی بہت کچھ باقی ہے جو ہم نے انہیں نہیں دیا۔

ولایت پورٹل: اہل سنت کے مشہور عالم دین ابن ابی الحدید نقل کرتے ہیں کہ ایک دن امام حسن مجتبیٰ علیہ السلام مدینہ کی ایک گلی سے گذر رہے تھے تو دیکھا کچھ بچے کھیل رہے ہیں اور ان کے سامنے کچھ روٹی کے ٹکڑے رکھے ہوئے جن میں سے وہ کبھی کبھی کھیل کے دوران اٹھا کر کھانے لگ جاتے ہیں۔ جیسے ہی ان کی نظریں امام حسن(ع) پر پڑی تو وہ حضرت کے پاس آئے اور آپ سے درخواست کی کہ آپ اپنی سواری سے اتر کر ہمارے ساتھ کھانا کھائیں۔ان کی دعوت کو قبول کرتے ہوئے آپ سواری سے اتر گئے اور ان کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھانے لگے۔
کچھ دیر کے بعد امام حسن علیہ السلام ان بچوں کو اپنے ساتھ اپنے گھر لے گئے اور ان کو بہترین کھانا کھلایا اور اچھا لباس پہنایا  اور خوب ان کی ضیافت کی اور فرمایا:میں نے انہیں کھانا کھلایا اور کپڑے دیئے لیکن پھر بھی ان کی بخشش اور سخاوت میری مہمان نوازی پر بھاری ہے چونکہ ان کے پاس اس وقت جو کچھ بھی تھا انہوں نے سب کچھ میرے سامنے لاکر رکھ دیا اور ہم نے انہیں اپنے گھر میں رکھے ہوئے  میں سے کچھ دیا ہے جبکہ ہمارے گھر میں ابھی بہت کچھ باقی ہے جو ہم نے انہیں نہیں دیا۔(1)۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
منبع:
1-    شرح نہج البلاغہ، ابن ابی الحدید، ج 11، ص 98۔


0
شیئر کیجئے:
متعلقہ مواد
फॉलो अस
नवीनतम