مغربی پٹی میں آباد کاری کے نئے منصوبے کی منظوری نہ دی گئی تو متزلزل کابینہ گر جائے گی: صیہونی عہدہ دار

ایک اسرائیلی عہدہ دار نے کہا ہے کہ اگر مقبوضہ مغربی کنارے میں آباد کاری کے نئے منصوبے کی منظوری نہ دی گئی تو اسرائیل کے متزلزل اتحاد کی متزلزل کابینہ گر جائے گی۔

ولایت پورٹل:اکسیوس ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق صیہونی حکومت کے ایک عہدہ دار نے کہا ہے کہ تل ابیب نے امریکہ کو مقبوضہ مغربی کنارے میں نئے ہاؤسنگ یونٹس بنانے کے ارادے سے آگاہ کر دیا ہے اور اگر اس علاقے میں نیا ہاؤسنگ یونٹ تعمیر نہیں کیا گیا تو اسرائیل کی متزلزل اتحادی کابینہ منہدم ہو جائے گی۔
قبل ازیں ذرائع ابلاغ نے اطلاع دی تھی کہ صیہونی حکومت مقبوضہ مغربی کنارے میں تقریباً 4000 نئے ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر کے منصوبے کی منظوری دینے کا ارادہ رکھتی ہے، رپورٹ کے مطابق نئے ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر کا اعلان اسرائیلی پارلیمنٹ میں نفتالی بینیٹ کی پارٹی کے نمائندوں میں سے ایک کی ڈیڈ لائن کے جواب میں کیا گیا ہے، جس نے یہ دھمکی دی تھی کہ اگر بستیوں کی ترقی کے لیے نیا منصوبہ بنایا گیا تو وہ اتحادی کابینہ چھوڑ دیں گے۔
غیر قانونی صیہونی حکومت کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے بتایا کہ تل ابیب نے مقبوضہ فلسطین میں امریکی سفیر ٹام نائیڈز کو بستیوں کی تعمیر کے اپنے منصوبے سے آگاہ کر دیا ہے، رپورٹ کے مطابق اسرائیلی حکام نے جو بائیڈن کی حکومت کو بتایا کہ اگر نئے ہاؤسنگ یونٹس نہ بنائے گئے تو اسرائیل کی متزلزل کابینہ منہدم ہو جائے گی۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین