Code : 4125 8 Hit

اگر بائیڈن صدر بن جاتے ہیں تو امریکیوں کو چینی زبان سکیھنا ہوگی:ٹرمپ

امریکی صدر کا دعویٰ ہے کہ 2020 کے انتخابات میں ان کے حریف چینیوں کی پیداوار ہیں اور اگر وہ جیت جاتے ہیں تو ، اس سے بیجنگ کے لیے امریکہ میں مزید اثر و رسوخ حاصل کرنے کا راستہ کھل جائے گا۔

ولایت پورٹل:نیویارک ٹائمز کی رپورٹ  کے مطابقامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا دعویٰ ہے کہ 2020 کے انتخابات میں ان کے کامیاب نہ ہونے کا مطلب چینی اثر و رسوخ کا برھنااور ملک کو ان کے حوالے کرنا ہوگا اس حد تک کہ امریکی عوام چینی زبان سیکھنے پر مجبور ہوجائیں گے، تاہم انہوں نے اس سے پہلے بھی کئی بار یہ دعوی کیا ہے کہ چینیوں کا امریکہ پر قبضہ کرنے کا ارادہ ہے لیکن اس بار ، سکیورٹی اداروں کی ایک رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے دعوی کیا ہےکہ بیجنگ چاہتا ہے کہ ڈیموکریٹک امیدوار جو بائیڈن 2020 کے انتخابات میں کامیابی حاصل کریں۔
ٹرمپ کا کہنا ہے کہ  اگر بائیڈن جیت جاتے ہیں تو چینی ریاستہائے متحدہ کا اقتدار سنبھال لیں گےجبکہ انہوں نے ان کے سامان پر جو محصولات عائد کیے ہیں ان وجہ سے چینیوں کو  67 برسوں میں بدترین تجربہ ہوا ہے، اس کے برعکس ، ڈیموکریٹک  پارٹی نے بھی اپنی انتخاباتی مہم میں دعوی کیا کہ امریکہ کے کسی بھی صدر نے چینیوں کے ساتھ اتنی نرمی نہیں برتی ہے جتنی ٹرمپ نے برتی ہے۔
اگرچہ ٹرمپ اپنے چینی ہم منصب الیون جنپنگ کے ساتھ اچھے تعلقات سے انکار نہیں کرتے ہیں، لیکن ان کا دعوی ہے کہ کورونا بحران کی وجہ سے  اب وہ ان کے ساتھ پہلے کی طرح دوست نہیں رہے ہیں،واضح رہے کہ اب جبکہ امریکی صدر امریکہ کے سب سے نااہل صدر ثابت ہوئے ہیں اور معاشی بحران سے لے کورونا وائرس کو کنڑول کرنے تک ہر میدان میں ناکام ہوئے ہیں تو اول فول بکتے ہوئے کبھی ایران پر کبھی چین پر الزام لگاتے ہیں کہ یہ امریکہ پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔




0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین