عراقی صوبہ صلاح الدین میں داعش کا زرعی آبی ذخائر پر حملہ

داعشی عناصر نے اپنی تازہ کارروائی میں صوبہ صلاح الدین میں زرعی آبی وسائل کو اڑا دیا۔

ولایت پورٹل:عراقی ذرائع ابلاغ کی رپورٹ کے مطابق  داعش کے عناصر نے صوبہ صلاح الدین میں زرعی آبی وسائل کے خلاف حملے کیے، رپورٹ کے مطابق  داعشی عناصر نے صوبہ صلاح الدین کے شمالی العلم علاقے میں خاص طور پر زرعی پانی کے ذرائع کو نشانہ بنایا، یہ حملے دستی بموں کا استعمال کرتے ہوئے کیے گئے تھے۔
 عراق کے مختلف حصوں میں داعش کے عناصر کی طرف سے دہشت گردانہ کاروائیاں حالیہ دنوں میں شدت اختیار کرچکی ہیں، بغداد کے ایک چوک میں داعش کے عناصر کے حالیہ خودکش بم دھماکوں میں کم از کم 32 افراد ہلاک اور 110 دیگر زخمی ہوگئے، نیز  بغداد بم دھماکوں کے کچھ دن بعد  ان عناصر نے صوبہ صلاح الدین میں الحشد الشعیبی فورس کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ، جس کے نتیجہ میں اس فورس کے متعدد جوان شہید ہوگئے۔
یادرہے کہ اگر عراقی حکومت 2017 میں اس ملک کے داعش کے خاتمہ کا اعلان  کر چکی ہے تا ہم اس تنظیم کے باقی ماندہ عناصر اس ملک کے مختلف علاقوں میں آئے دن دہشتگردانہ کاروائیاں کرتے رہتے ہیں اور عراقی فوج نیز متعدد شخصیات کا نشانہ بناتے رہتے ہیں اس لیے کہ انھیں امریکہ کی مکمل پشت پناہی حاصل ہے اور وہ اپنے کمپوں میں دہشتگرد عناصر کو فوجی تربیت دیتا ہے تا کہ اس ملک میں اپنی غیر قانونی موجودگی کو جواز فراہم کر سکے۔
یاد رہے کہ متعدد عراقی عہدہ داروں نے بار ہا انتباہ دیا ہے کہ امریکہ اس ملک میں داعشی دہشت گردوں کے محفوظ پناہ گاہ ہے اور وہ یہاں رہنے کےلیے پورے ملک کے آگ کے شعلوں میں بھی ڈھکیلنے کے لیے تیار ہے نیز زمینی حقائق بھی اس کا منھ بولتا ثبوت ہیں۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین