دھاندلی سے ہونے والی شکست کو ہرگز نہیں مانوں گا: ٹرمپ

موجودہ امریکی صدر کاکہنا ہے کہ چونکہ انتخابات میں دھاندلی ہوئی ہے لہذا وہ ہرگز اپنی شکست کا اقرار نہيں کریں گے۔

ولایت پورٹل:امریکی صدر نے ریاست جارجیا میں اپنے ایک خطاب کے دوران کہا اگر انہیں انتخابات میں شکست ہوتی وہ اس تسلیم کرلیتے لیکن چونکہ انتخابات میں دھاندلی ہوئی ہے لہذا وہ ہرگز اپنی شکست کا اقرار نہيں کریں گے۔
ڈونلڈ ٹرمپ نے اتوار کی صبح اپنے خطاب میں دعوی کیا کہ انتخابات میں دھاندلی ہوئی ہے، ہم کو کامیابی ملے گی اور ہم بہت جلد سپریم کورٹ سے رجوع کریں گے،  انہوں نے اپنے خطاب میں دعوی کیا کہ انتخابات میں ان کی شکست سے سب سے زیادہ خوشی چین اور اس کے بعد ایرانی حکام کو ہوئی ہے۔
ٹرمپ نےایران کے ساتھ ہونے والے جامع ایٹمی معاہدے میں دوبارہ شمولیت سے متعلق جوبائڈن کے فیصلے پر تنقید کرتے ہوئے دعوی کیا کہ جو بائڈن ایران کو رقم فراہم کرنے کا اقدام کریں گے، لیکن اگر میں کامیاب ہو گيا تو ایک گھنٹے کے اندر ایرانی حکام کو اپنے آفس میں بلاکر سمجھوتے پر دستخط کر دوں گا۔ ٹرمپ نے دعوا کیا کہ اس بات امکان اب بھی موجود ہے۔
امریکی قوانین کے تحت صدارتی امیدوار کو وہائٹ ہاؤس میں جانے کے لئے 270 الیکٹرال ووٹوں کی ضرورت ہوتی ہے۔ ایک ماہ قبل ہونے والے انتخابات میں ٹرمپ کے حریف جوبائڈن کو ٹرمپ کے 232 الیکٹرال ووٹوں کے مقابلے 306 ووٹ ملے ہیں۔
سحر

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین