Code : 4026 2 Hit

مجھے نہیں معلوم کہ ٹرمپ کس منھ سے خود کو قانون اور نظم وضبط کا صدر کہتے ہیں:امریکی ماہر

ای بی سی نیوز کے ایک ممتاز تجزیہ کار نے امریکہ میں مظاہرین پر پرتشدد کریک ڈاؤن کا حوالہ دیتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ کی پالیسیوں کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

ولایت پورٹل:بی بی سی نیوز کے ایک ماہر نے زور دے کر کہا کہ امریکہ میں پرتشدد مظاہروں کو دبانے کے لئے اٹھائے گئے اقدامات کے کے بعد یہ واضح ہو گیا ہے کہ اب امریکہ میں فاشزم کو دیکھا جاسکتا ہے، رپورٹ کے مطابق حالیہ دنوں میں وفاقی فورسز کو آنسو گیس اور لاٹھیوں کے استعمال سے مظاہرین کو منتشر کرنے اور ان کا مقابلہ کرنے کے لئے پورٹلینڈ میں تعینات کیا گیا ہےجبکہ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ انتشار پسندوں کا مقابلہ کرنے کے لئے پورٹ لینڈ میں مزید فوج بھیجیں گے، انہوں نے زور دے کر کہا کہ ان لوگوں کا مقابلہ وفاقی افواج کے ذریعہ کیا جارہا ہے ، وہ مٹھی بھر انتشار پسند ہیں ، اور کچھ کے کہنے کے برخلاف ، انہیں مظاہرین نہیں کہا جاسکتا ، ٹرمپ کے مطابق ، یہ وہ لوگ ہیں جو امریکہ سے نفرت کرتے ہیں اور اس طرح کے اقدامات جاری رکھنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ہے،واضح رہے کہ امریکہ کی موجودہ صورتحال افغانستان سے بھی زیادہ خراب ہے ۔
ٹرمپ کا کہنا ہےکہ امریکہ کے متعدد شہروں کی حالت بہت خراب ہے  ،شائد  ہی ایسے حالات ان شہروں کے باشندوں  اس سے پہلے کبھی دیکھے ہوں گے اور اگر بائیڈن جیت جاتے ہیں تو پورے ملک کے حالات ایسے ہی ہوں گے، ای بی سی چینل کے ماہر جوہی بہار نے کہا   کہ مجھے نہیں معلوم کہ ڈونلڈ ٹرمپ صورت حال کا افغانستان کے ساتھ موازنہ کیسے کرتے ہیں ، مجھے نہیں معلوم کہ وہ اس وقت اپنے آپ کو امن وقانون کا صدر کس طرح کہتے ہیں جبکہ ان کے  آس پاس کے ہر فرد یا تو جیل میں ہے یا سڑک پر ۔
 





0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین