Code : 1124 48 Hit

زمین و آسمان کی زینت اور نجات کی کشتی

رسول خدا(ص) نے ارشاد فرمایا:اے ابی! اس ذات کی قسم جس نے مجھے رسول بنایا ہے،حسین بن علی(ع) آسمانوں میں زمین سے زیادہ عظیم ہیں اور عرش خدا(ص) کے داہنی سمت تحریر ہے:’’ إنَّ الحُسَینَ مِصباحُ الهُدی وسَفینَةُ النَّجاةِ‘‘بے شک حسین ہدایت کا چراغ اور نجات کی کشی ہے.

ولایت پورٹل: کتاب عیون اخبار الرضا علیہ السلام میں حضرت امام حسین(ع) سے نقل ہوا ہے کہ ایک دن میں اپنے نانا رسول خدا(ص) کی خدمت بابرکت میں حاضر ہوا اس وقت آپ کے حضور ابی بن کعب بھی بیٹھا ہوا تھا رسول خدا(ص) نے مجھے دیکھ کر فرمایا:’’شاباش اے  ابوعبد اللہ ! اے زمین و آسمانوں کی زینت!
ابی بن کعب نے سرکار رسالتمآب(ص) سے کہا:’’یا رسول اللہ! آپ کے علاوہ کوئی دوسرا کیسے آسمان و زمین کی زینت قرار پاسکتا ہے؟
رسول خدا(ص) نے ارشاد فرمایا:’’ اے ابی! اس ذات کی قسم جس نے مجھے رسول بنایا ہے،حسین بن علی(ع) آسمانوں میں زمین سے زیادہ عظیم ہیں اور عرش خدا(ص) کے داہنی سمت تحریر ہے:’’ إنَّ الحُسَینَ مِصباحُ الهُدی وسَفینَةُ النَّجاةِ‘‘بے شک حسین ہدایت کا چراغ اور نجات کی کشی ہے۔(دانشنامه امام حسین(ع)، ص 88 ح 443)
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دیگر منابع:
1۔إعلام الورى: ج 2 ص 186۔
2۔ الصراط المستقيم: ج 2 ص 161۔
3۔ المنتخب، طريحى: ص 197۔
4 ۔مدينة المعاجز: ج 4 ص 51۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम