Code : 1008 18 Hit

بچوں کو فضول خرچی سے کیسے روکا جائے؟

جو چیزیں اور وسائل آپ کے پاس گھر میں موجود ہیں آپ اپنے بچوں کو ان کے بارے میں بتائیے اور انہیں محنت ومشقت سے کمائے گئے پیسہ کی اہمیت بتائیے تاکہ وہ یہ بات ذہن نشین کرلیں کہ وہ پیسہ جو زحمت و مشقت سے حاصل ہوتا ہے اسے بلا وجہ خرچ کرنا نہیں چاہیئے۔

ولایت پورٹل: قارئین کرام! ہمارے دور کی آج نئی نسل  کے بچے کسی بھی غیر ضروری کھلونوں، کارٹونس اور ٹیڈی بئر کی دکان یا شوروم پر پنچے گڑا کر کھڑے ہوجاتے ہیں اور جب تک والدین کی جیب ڈھیلی نہ کردیں آگے بڑھنے کے لئے تیار ہی نہیں ہوتے۔
اگرچہ کھیلنا کودنا بچوں کی فطرت ہے اس پر پابندی عائد نہیں کی جاسکتی اور نہ اس اُمنگ کا گلا کھونٹا جاسکتا ہے۔بہر حال بچوں کو کھولونے بھی خریدوانا پڑتے ہیں لیکن بہر حال بچوں کو سمجھانا بہت سخت کام ہے اور اگر والدین اپنے بچوں کو اپنے نظریہ سے قانع کرپائیں تو ایک بہت بڑا ہنر ہوتا ہے۔
اب سوال یہ ہے کہ ان بچوں کو کیسے قانع کیا جائے کہ جس سامان کو وہ خریدنا چاہتے ہیں وہ پہلے ہی ان کے پاس موجود ہے اور مزید ویسے ہی کھلونے خریدنا اسراف ہے؟چونکہ بچوں کو یہ یقین دلانے کے لئے کہ ان کا کام اسراف اور فضول خرچی کے زمرے میں آئے گا بہت سخت مرحلہ ہے چونکہ انہیں تو اس طرح کے اخراجات کھانا کھانے سے بھی زیادہ معمولی کام لگتے ہیں
پس ہمیں سب سے پہلے اپنے نظریہ تک اپنے بچوں کو لانے کی ضرورت ہے چنانچہ ہم اپنے بچوں کو جتنا اسراف اور فضول خرچی سے دور لے جانے کے خواہاں ہیں اتنا ہی ہمیں ان نعمتوں کے شکریہ کی طرف متوجہ کرنے کی کوشش کرنا چاہیئے جو ہمارے پاس پہلے سے موجود ہیں۔
آپ اپنے بچوں کے نظریہ پر کام کریں انہیں سوچنے اور غور و فکر کرنے کا عادی بنائیں مثال کے طور پر آپ نے اپنے بچے کو کچھ پیسہ دیا اب آپ اس کے سامنے دو آپشن رکھئے اور اسے انتخاب کرنے کا حق دیجئے اور کہیئے بیٹا! یہ تمہارے پاس پیسہ ہے اب چاہے تو تم اس سے اپنے کھلونا خرید لو یا ایک موزے کی جوڑی خرید لو کہ جو تمہیں خریدنا ہے اور اسے پہن کر اسکول جانا ہے۔
آپ بچوں کو سرگرم  عمل رکھنے کے لئے انہیں پرانی چیزوں کے بنانے یا انہیں تعمیر کرنے کی ترغیب دلائیں اور جدید وسائل کو گھر میں موجود خراب چیزوں سے بنانے کی عادت کو اپنے گھر کے کلچر میں شامل کردیجئے۔
آپ اپنے بچوں کے سامنے کبھی ایسے افراد کا تذکرہ اور تعریف نہ کریں جو زیادہ خرچیلے ہوں بلکہ اس کے برعکس، قناعت پنسد اور فضول خرچی سے محفوظ لوگوں کی باتیں شوق سے سنائیں۔
چنانچہ جو چیزیں اور وسائل آپ کے پاس گھر میں موجود ہیں آپ اپنے بچوں کو ان کے بارے میں بتائیے اور انہیں محنت ومشقت سے کمائے گئے پیسہ کی اہمیت بتائیے تاکہ وہ یہ بات ذہن نشین کرلیں کہ وہ پیسہ جو زحمت و مشقت سے حاصل ہوتا ہے اسے بلا وجہ خرچ کرنا نہیں چاہیئے۔

 


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम