Code : 4359 6 Hit

ایران سے اسلحہ جاتی پابندیاں ہٹیں گی تو حزب اللہ مزید مضبوط ہوگی؛امریکہ کی ہرزہ سرائی

امریکی وزیر خارجہ کا دعویٰ ہے کہ ایران پر اسلحہ کی پابندی کو ختم کرنا حزب اللہ کو مزیدمسلح کرنے کا باعث بنے گا جو لبنان میں فرانس کے اقدامات کے منافی ہے۔

ولایت پورٹل:امریکی وزیر خارجہ مائک پومپیو نے انٹر فرانس ریڈیو کو انٹرویو دیتے ہوئے  دعوی کیا کہ پیرس حزب اللہ کے ہتھیاروں کے بارے میں سوچے بغیر لبنانی بحران حل کرنے کی کوشش کر رہا ہےجس سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا، امریکہ نے گذشتہ ہفتے حزب اللہ کے ساتھ تعاون کرنے کے الزام میں دو لبنانی سابق وزراء کو پابندیوں کی فہرست میں شامل کیا ہے۔
پومپیو نے اس دوران یہ دعوی  بھی کیا کہ امریکہ ایران کو چینی ٹینک اور روسی دفاعی نظام خریدنے سے روکنے کے لئے اپنا کام کر رہا ہے اور نیز وہ حزب اللہ کو اسلحہ فروخت کرنے اور میکرون کی کوششیں ناکام ہونےکی اجازت نہیں دے گا ۔
یقینا پامپیو کا مقصد ایران پر اسلحہ کی پابندی میں توسیع کرنے کے لئے فرانس پر دباؤ ڈالنا ہے کیوں کہ انھوں نے اس کے فورا بعدکہاکہ آپ ایران کو زیادہ سے زیادہ رقم ، طاقت اور اسلحہ رکھنے کی اجازت نہیں دے سکتے اور اس کے ساتھ ان سانحات کے تسلسل کو بھی  روکیں جو حزب اللہ انجام دے رہی ہے۔
یادرہے کہ پومپیو نے بھی کل فاکس نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے دعوی کیا تھاکہ  یورپی  بھی جانتے ہیں کہ ایران پر سے اسلحہ کی پابندی اٹھانا برا خیال ہے، مجھے یقین ہے کہ امریکہ ایک ہفتہ کے اندر کامیاب ہوجائے گا اور ٹرگر میکانزم کو چالو کردیا جائے گا  تاکہ ایران پر ایک بار پھر اسلحے کی اسمگلنگ پر پابندی عائد ہو جائے۔
واضح رہے کہ پومپیو کا یہ دعویٰ اس وقت سامنے آیا ہے جب کہ ایران کے ساتھ ہونے والے ایٹمی معاہدے کے یورپی شراکت دار اس سے قبل ایران کے خلاف اسلحہ کی پابندیوں میں توسیع کی واشنگٹن کی درخواست مسترد کر چکے ہیں جبکہ سلامتی کونسل نے ایران میں بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے جاری معائنوں کے علاوہ ، "IAEA بورڈ کو مطلوبہ اقدامات" پر ایران کی تعمیل پر نگرانی کرنے کی امریکی درخواست پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے،ان کا کہنا ہے کہ واشنگٹن کو ٹرگر میکانزم کو چالو کرنے کا حق  نہیں ہے جو ایران کے خلاف بین الاقوامی پابندیوں کے خود کار طریقے سے بحالی کی ضمانت دیتا ہے۔
 


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین