حزب اللہ ہمارے وجود کے لیے خطرہ ہے؛ صیہونیوں کا پہلی باراعتراف

صہیونی حکومت نے پہلی بار باضابطہ طور پر اعلان کیا کہ لبنانی حزب اللہ  تحریک کے میزائل ہمارے وجود کے لئے خطرہ ہیں۔

ولایت پورٹل:روزنامہ الاخبار نے آج کی اپنی رپورٹ میں لکھا ہے لبنانی حزب اللہ تحریک کی میزائل صلاحیتوں کے بارے میں ، بڑے چھوٹے اسرائیلی فوجی عہدیداروں کے تبصرے کے بعد صیہونی وزیر جنگ  بنی گانٹز کی باری تھی کہ وہ پہلی بار اس صلاحیت کو باضابطہ طور پر تسلیم کریں،رپورٹ کے مطابق دشمن فوج کے عہدیدار کے ذریعہ تل ابیب کابینہ اور اسرائیلی عوام کے سامنے یہ اعلان پہلی بار  کیا گیا ہے کہ حزب اللہ کے میزائل اسرائیل کے وجود کے لیے خطرہ ہیں ۔
 اس سے بھی اہم بات یہ ہے کہ یہ بیان  ایک  نامہ نگار کے سوال کے جواب میں، تقریر کی غلطی کے نتیجے میں یا زبانی کشمکش میں نہیں دیا گیا ہے بلکہ گانٹز نے اسرائیلی پارلیمنٹ) کے سامنے صیہونی حکومت کے جاسوسوں سے متعلق قانون میں ترمیم کا جائزہ لینے کے لئے ایک اجلاس میں ایک منظم  اور پہلے سے تیار کی ہوئی تقریر میں کیا ہے، رپورٹ کے مطابق ، اسرائیلی وزیر جنگ نے اس بات پر زور دیا کہ حزب اللہ کے میزائل اسرائیل  کے وجودکے لئے خطرہ ہیں۔
 گانٹز نے حزب اللہ کی اپنی میزائل صلاحیتوں کو بڑھانے کی کوششوں کو بیان کیا  اور ان کی درستگی نے اس طرح کے غیر معمولی بیانات کی بنیاد فراہم کی ، جبکہ انھوں نےیہ  دعویٰ بھی کیا کہ تل ابیب حزب اللہ کے میزائلوں کی طاقت کو بڑھنے کی اجازت نہیں دے کہ اس کا وجود خطرے میں پڑ جائے۔
یادرہے کہ متعدد صیہونی عہدہ دار اس سے پہلے بھی حزب اللہ سے اپنے خوف و ہراس کو بیان کر چکے ہیں کہ اس تنظیم کے میزائلوں کے ڈر کی وجہ سے انھیں راتوں میں نیند نہیں آتی اور فوجی نوکریاں چھوڑ کر بھاگنے کی کوشش کر رہے ہیں۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین