امریکی ریاست کیلیفورنیا میں جہنم کا منظر؛بائیڈن کا تباہ کن صورتحال کا اعلان

امریکی صدر جوبائیڈن اس ملک کی ریاست کیلی فورنیا میں تباہ کن صورتحال کا اعلان کرتے ہوئے یہاں کا دورہ کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں جو کہ وسیع پیمانے پر آتشزدگیوں میں گھری ہوئی ہے۔

ولایت پورٹل:روئٹرز نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق  امریکی صدر جو بائیڈن نے مغربی ریاستہائے متحدہ میں واقع کیلیفورنیا  ریاست کےجنگلات میں لگنے والی آگ کی وجہ سے اس ریاست کی صورتحال تباہ کن ہونے کا اعلان کیا ہے، رپورٹ کے مطابق بائیڈن ریاست میں تباہی کی تصدیق کرنے کے بعد آتشزدگی کی شدت کا اندازہ لگانے کے لیے پیر کے روز ریاستی دارالحکومت سیکرامنٹو کا سفر کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔
وائٹ ہاؤس کے ترجمان نے کہاکہ امریکی صدر بائیڈن نے اعلان کیا ہے کہ ریاست کیلیفورنیا میں ایک بڑی تباہی ہوئی ہے ،تاہم انھوں نے ریاستی ، علاقائی اور مقامی سطح پر کوششوں کی حمایت کے لیے وفاقی امداد کے استعمال کا حکم دیا ہے  جبکہ 14 اگست کو شروع ہونے والی آتشزدگی ابھی تک جاری ہے۔
یادرہے کہ بائیڈن نے گذشتہ ہفتے کہا تھا کہ حالیہ آگ ، طوفان اور سیلاب نے امریکہ کے کچھ حصوں کو شدید نقصان پہنچایا ہے جبکہ اس موسم گرما میں 100 ملین سے زائد امریکیوں کی زندگی متاثر ہوئی ہے،واضح رہے کہ امریکی صدر پہلے ہی ریاست کیلیفورنیا میں ہنگامی حالت کا اعلان کر چکے ہیں ، جو کئی مہینوں سے جنگل کی آگ سے لڑ رہی ہے،اے ایف پی کے مطابق دریں اثنا ، ڈیموکریٹک گورنمنٹ کیلیفورنیا کے گورنر گوین نیوسام جو اس سے قبل مختلف قسم کے بحرانوں جیسے  کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے لیے بڑے پیمانے پر تنقید کا نشانہ بن چکے ہیں ، پر ان کے حریفوں نے آگ پر قابو پانے میں مدد دینے میں کمی کرنے کا الزام لگایا ہے۔
یادرہے کہ کیلیفورنیا کے گورنر کے ریپبلکن حریف کیون کیلی نے کہا کہ یہ ہماری حکومت کی بنیادی چیزوں جیسے جنگل کے انتظامات کو سنبھالنے میں ناکامی کو ظاہر کرتا ہے،واضح رہےکہ کیلیفورنیا کے جنگلات میں لگنے والی آگ کے نتیجے میں سیکڑوں گھر تباہ اور ہزاروں افراد اپنے گھر چھوڑنے پر مجبور ہو گئے ہیں جہیں دوسری جگہوں پر بسانے کو لے کر بھی ایک بحران پیدا ہوچکا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین