Code : 2412 48 Hit

سعد الحریری کی کرسی سے عجیب بے رخی

ایک لبنانی اخبار نے لکھا ہے کہ اس ملک کے وزیراعظم نے سیاسی پارٹیوں اور سیاسی عہدہ داروں سے کہا ہے کہ ان کی نظر میں قومی اتحاد پر مبنی حکومت کا کوئی فائدہ نہیں اور فی الحال وہ وزارت عظمیٰ کی کرسی پر واپس نہیں جانا چاہتے۔

ولایت پورٹل:پچھلے اکیس دن سے لبنان میں ہنگامہ آرائی اور آشوب برپا ہے جس میں کل  بھی مختلف مقامات پر مظاہرے جاری رہے ہیں، ادھر نئی حکومت بنانے کی کوشش کرتے ہوئے ہوئے اس ملک کے وزیرخارجہ جدران باسیل نے دو دن پہلے یہاں کے وزیراعظم سعد الحریری کے ساتھ ملاقات کی ہےنیز کہا جارہا ہے کہ دونوں  رہنماؤں نے کل رات بھی ملاقات کی ہے، دونوں عہدیداروں کی دوسری ملاقات الحریری اورلبنان کے وزیر خزانہ علی حسن خلیل کی آپسی ملاقات کے بعد ہوئی جس میں وزیر خزانہ نے نئی حکومت بنانے کے سلسلے میں حزب اللہ اور امل تحریک کےنظریے کے بارے میں وزیراعظم کو بتایا، لبنان کے اخبار الجمہوریہ نے اس سلسلے میں لکھا ہے کہ سعد الحریری  اپنے نظریے پر اڑے ہوئے ہیں اور وزیراعظم کی کرسی پر واپس آنے کے لیے تیار نہیں ہیں انہوں نے اپنے موقف کو باسیل،  حزب اللہ اور دیگر تمام سیاسی شخصیتوں اور اعلی عہدے داروں تک پہنچا دیا ہے، الحریری نے کہا ہے کہ وہ ایسے شخص کا نام پیش کرنے کے لئے تیار ہیں جس کو سب مانتے ہوں جو وزارت عظمی کا عہدہ سنبھال کر ماہرین پر مشتمل افراد کی کابینہ تشکیل دے جو کسی بھی سیاسی پارٹی سے وابستہ نہ ہو ، لبنان کے وزیر اعظم نے کچھ افراد کے نام پیش بھی کئے ہیں جن میں سے بعض کے ناموں پر غور  بھی کیا جا رہا ہے ،الحریری نے استعفی واپس نہ لینے اور  وزارت عظمیٰ عہدہ  نہ سنبھالنے  کی وجہ یہ بتائی ہے کہ ان کی نظر میں اب قومی اتحاد پر مبنی حکومت نہیں بن سکتی اور نہ ہی اس کا کوئی فائدہ  ہوگا،لبنانی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ آج کل یہاں پر ایسے ماہرین پر مبنی حکومت تشکیل دینے کی باتیں کی جارہی ہیں کہ جن میں سعد الحریری  شامل نہیں ہیں،جن افراد کے نام وزارت عظمیٰ  کے لیے پیش کیے گئے ہیں ان میں وزیرداخلہ ریا الحسن، بین الاقوامی عدالت انصاف کے جج نواف سلام  اور اقوام متحدہ میں لبنان کے سابق سفیر شامل ہیں۔
 باسیل نے سعد الحریری کے ساتھ ملاقات میں درج ذیل نقاط پر مبنی تجویز پیش کی ہے:
1۔ مشہور سیاستدانوں کو شامل نہ کرتے ہوئے حکومت بنائی جائے۔
2۔وزیراعظم اپنے قابل اعتماد شخص کا نام پیش کریں تاکہ سیاسی طاقتوں  کی تائید حاصل کرنے کے بعد حکومت بنائی جاسکے
 2۔ وہ لائق سیاسی افراد خاص طور پر جو اقتصادی میدان میں ماہر افراد   کا نام پیش کریں اس لئے کہ موجودہ دور ملک کو ایک قابل ٹیم کی ضرورت ہے ۔
4۔ مظاہرین سے ان کی رائے پوچھی جائے اور کہ وہ کس کو نئی حکومت کے لیے لانا چاہتے ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम