Code : 3128 47 Hit

حماس کی بات ہی نہیں اس سے چھوٹی تنظیمیں بھی ہمیں تباہ کرسکتی ہیں؛ صیہونی جنرل کا اعتراف

ایک صہیونی جنرل نے غزہ میں حماس اور صیہونی حکومت کے مابین جنگ بندی کو سراب قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حماس سے چھوٹے گروہ اتنے مضبوط ہیں کہ وہ اسرائیل کو عبرتناک جنگ میں ڈھکیل سکتے ہیں۔

ولایت پورٹل:بین الاقومی اخبار رای الیوم کی  رپورٹ کے مطابق حماس اور صیہونی حکومت کے مابین جنگ بندی دونوں فریق بخوبی واقف ہیں کہ یہ جنگ بندی بے معنی ہے اور آج نہیں تو  کل  ایک خطرناک جنگ ہو کررہے گی۔
یادرہے کہ  اسرائیل اور حماس کے درمیان آخری جنگ 2014 کےموسم گرما میں ہوئی جس کو اسرائیل نے "سخت چٹان" کہا تھا ، یہ جنگ 51دن تک جاری رہی اور یہ قابض صیہونی حکومت کی تاریخ کی سب سے طویل جنگ تھی ۔
اس جنگ میں  اسرائیل نہ غزی پٹی پر قبضہ کر سکا اور نہ ہی حماس کا خاتمہ کر سکا جبکہ  صیہونی  حکومت نے اس جنگ  کے لیے باقاعدہ طورپر  منصوبہ بندی کی تھی۔
اسی سلسلہ میں  صہیونی جنرل زبول آموس کا کہنا ہے کہ اسرائیل نے خود کو غزہ کے ایک خطرناک جال میں پھنسا لیا ہے  کیوں کہ حماس غزہ پٹی سے بعض اوقات صہیونی بستیوں کو راکٹ کے ذریعہ  نشانہ بنانےوالے فلسطینی گروہوں کو رک سکتی ہے لیکن وہ ان گروہوں کے ساتھ اندرونی طور پر الجھنے سے پرہیز کرتی ہے۔
صہیونی اخبار معاریئو نے صہیونی جنرل کے حوالے سے بتایا کہ کبھی کبھی غزہ پٹی کے تمام فلسطینی مزاحمتی گروہوں کو ختم کرنے کی ضرورت کے بارے میں گفتگو ہوتی ہے  تاہم  اس سے یہ ثابت نہیں ہوتا کہ اسرائیل وسیع جنگ کے لیے تیار ہے۔
صیہونی جنرل نے مزید کہا کہ اگر چہ  لوگ افراد نیتن یاہو کو اسرائیل میں ہونے والے انتخابات سے پہلے حماس کے ساتھ فوجی محاذ آرائی کے لیے اکسارہے ہیں۔
 




0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम