Code : 3158 56 Hit

حماس اور روس نے صدی ڈیل کو شکست دینے کے لیے معاہدہ کیا ہے:صیہونی تجزیہ کار

ایک صیہونی تجزیہ نے کہا کہ "صدی ڈیل کو عملی جامہ پہنانے کے لئے امریکہ کی خفیہ کوششوں کی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ حماس کے رہنما اور روسی وزیر خارجہ نے حالیہ اجلاس میں اس منصوبے کو شکست دینے کے لئے اتفاق کیا ہے۔

ولایت پورٹل:نیوز وان کی رپورٹ کے مطابق صہیونی تجزیہ کار یونی بن مناخم نے کہا کہ امریکہ نے حماس  اور فلسطینی اتھارٹی  سمیت فلسطینی حلقوں کے ساتھ خفیہ رابطہ کرکے صدی ڈیل کو عملی جامہ پہنانے کی جان توڑ کوشش کی لیکن اس کی کوششیں ناکام ہو گئیں۔
بن مناخم کا کہنا ہے کہ اسماعیل ھنیہ نے حال ہی میں ایک "سیاسی بم" پھینکا جب انہوں نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ انتظامیہ نے متعدد بارکئی چینلوں کے ذریعہ  حماس کے ساتھ رابطے کی کوشش کی لیکن اس تحریک ان کی  تجویز کو مسترد کردیا ۔
مناخم نے مزیدکہا ہے کہ حماس کا یہ سیاسی بم خود نے نہیں پھٹ گیا بلکہ اس تنظیم کے سیاسی شعبے کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے روس کے اپنے حالیہ دورے میں روس کے ساتھ صدی ڈیل کے منصوبے کو ناکام بنانے کے لیے مشترکہ کوششوں پر مبنی معاہدہ کیا ہے ،اس کے بعد انھوں نے یہ سیاسی دھماکہ کیا ہے۔
صہیونی تجزیہ کار نے آخر میں کہا کہ حماس کی واشنگٹن کے ساتھ خفیہ مذاکرات کی مخالفت کی وجہ  عرب ممالک بالخصوص مصر ، سعودی عرب ، عمان ، بحرین اور متحدہ عرب امارات کی جانب سے  تحریک پر دباؤ بڑھے گا۔
یادرہے کہ فلسطینی تنظیم حماس کے پولیٹیکل بیورو کے چیف اسماعیل ہنیہ  نے رواں ماہ اپنے روس کے دورے میں ماسکو میں روسی وزیر خارجہ سے ملاقات کی اور تین اہم معاملات پر تبادلۂ خیال کیا جس میں صدی ڈیل کو ناکام بنانے کے مشترکہ کوششیں بھی تھیں۔


 




0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین