صیہونی درندوں کے ہاتھوں مسجد الاقصی کا محافظ اغوا

صیہونی جارح پولیس نے مسجد الاقصی کے باب مجلس کے قریب تعینات ایک محافظ کو اغواکر لیا۔

ولایت پورٹل: فلسطینی ذرائع ابلاغ کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصیٰ کے باب مجلس کے قریب تعینات محافظ طارق صندوقا کو اغوا کر لیا، صندوقا کو قدیم بیت المقدس کے پولیس اسٹیشن میں تحقیقات کے لئے منتقل کر دیا گیا،سنہ 2020 کے دوران اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصیٰ کے 13 محافظین اور ملازمین کو مختلف حیلوں بہانوں سے مسجد میں داخلے سے روک دیا تھا۔
قابض اسرائیلی حکام اور بیت المقدس میں اس کی پولیس نے مسجد اقصیٰ میں داخلے سے روکنے کا اختیار اپنے قبضے میں لے رکھا ہے اور وہ اس اختیار کا استعمال کرتے ہوئے نمازیوں اور محکمہ اوقاف کے ملازمین کے قبلہ اول میں داخلے پر پابندی لگا دیتے ہیں، اسرائیل اور دیگر علاقائی فریقوں کے درمیان معاہدوں کے مطابق بیت المقدس کی مسلمان اور عیسائی مقامات مقدسہ کا انتظام کار اردن کے پاس ہے مگر اس کے باوجود اسرائیل اپنے اختیارات سے تجاوز کر کے مسجد اقصیٰ میں نماز کے لئے آنے والوں پر پابندی لگاتا رہتا ہے،علاوہ ازیں قابض اسرائیلی فوج کے اہلکاروں نےجنین کے علاقے سے ایک فلسطینی نوجوان کو اغوا کر لیا، ذرائع کے مطابق اسرائیلی فوج نے دئیر ابو ضعیف کے دیہات میں کارروائی کرتے ہوئے مجدی عواد کو حراست میں لے لیا۔
مرکز اطلاعات فلسطین

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین