Code : 3282 14 Hit

ہمارے فوجیوں کی لاشیں دو تو ہم طبی وسائل دیں گے؛صیہونیوں کا فلسطینوں سے مطالبہ

صیہونی وزیر جنگ نے غزہ پٹی کی کرونا وائرس کا مقابلہ کرنے کے لیے طبی امداد فراہم کرنے کے لیے وہاں لاپتہ دو صیہونی فوجیوں کی لاشیں اسرائیل کے حوالہ کرنے کی شرط رکھی ہے۔

ولایت پورٹل:روئٹرزنیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق صیہونی وزارت جنگ نے بدھ کے روز غزہ  پٹی کو کورونا وائرس کے پھیلنے سے نمٹنے کے لئے کوئی طبی امداد  فراہم کرنے  کے لیے اس علاقہ میں ایک سال تک جاری رہنے والی جنگ کے دوران لاپتہ ہونے والے دو صیہونی فوجیوں کی دو لاشوں کی واپسی کی شرط رکھی ہے۔
مذکورہ رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیر جنگ نفتالی بنت نے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ اب جبکہ غزہ میں انسانی امداد کی بات کی جاتی ہے تو  اسرائیل کو انسانی امداد کی ضرورت ہے  جو لاپتہ فوجیوں کی لاشوں کی واپسی ہے۔
بنت  نے مزید کہا کہ میرے خیال میں  ہمیں غزہ اور اسرائیل کو درپیش انسانی ضروریات کے بارے میں وسیع پیمانہ پر مذکرات کرنے کی ضرورت ہےنیز واقعات کو الگ کرنا درست نہیں ہے۔
واضح رہے کہ صہیونی حکومت کورونا وائرس کے بحران سے نمٹنے کا بہانہ بنا کر غزہ پٹی کو بلیک میل کرنے کی کوشش کررہی ہے جبکہ خوداس قابض حکومت کے پاس طبی وسائل کی شدیدکمی ہے  یہاں تک کہ یہ   راکٹ بنانے کی ایک  فیکٹری کو سانس لینے کے آلات بنانے میں تبدیل کرنے  پر مجبور ہوئے ہیں۔
یادرہے کہ مقبوضہ فلسطین میں اب تک  6092افرادکورونا وائرس  میں مبتلا ہوچکے ہیں جبکہ 26 افراد اس وائرس سے موت ک شکار ہوچکے ہیں ۔
قابل ذکر ہے کہ غزہ پٹی کی آبادی بیس لاکھ کے قریب ہے اور  وہاں اب تک کورونا وائرس کی 12کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں  جبکہ طبی عہدہ داروں کا کہنا ہے کہ ان کے پاس  صرف96 وینٹیلیٹر موجود ہیں۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम