Code : 3386 30 Hit

جرمن پارلیمنٹ کا ایران کے ساتھ نیا جوہری معاہدہ کرنے کا مطالبہ

جرمن پارلیمنٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی کے سربراہ نے ایران کے ساتھ علاقائی امور سمیت ایک نئے اور وسیع جوہری معاہدے کا مطالبہ کیا ہے۔

ولایت پورٹل:جرمن پارلیمنٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی کے چیئرمین نوربرٹ روٹگن نے ویلٹ اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے  ایران کے ساتھ نئے جوہری معاہدے کا مطالبہ کیا ہے۔
انہوں نے ایران کے ساتھ نئے جوہری معاہدے کے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اس سے پہلے ہونے والے مشترکہ ایٹمی معاہدے کا مقصد ایران کے جوہری ہتھیاروں کی صلاحیتوں کو روکنا تھا لیکن امریکہ کی اس معاہدے سے یکطرفہ دستبرداری کے بعد ایران نے ایک بار پھر جوہری سرگرمیاں دوبارہ شروع کر کے چیلنج کا آغاز کردیا ہےلہذا ، ایک نیا معاہدہ  کرنا ضروری ہے جو وسیع تر ہو اور اس میں علاقائی استحکام سے متعلق اموربھی شامل ہوں۔
یادرہے کہ بین الاقوامی برادری کی مخالفت اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی شرائط پر ایران کی مکمل پابندی کے باوجود  امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی اور بین الاقوامی برادری یہاں تک کہ کچھ امریکی حکام کی درخواستوں کو نظر انداز کرتے ہوئے ایک سال قبل ایران کے ساتھ جوہری معاہدے سے یکطرفہ طور پر دستبرداری کا اعلان کردیا ۔
واضح رہے کہ اس کے بعد امریکہ  نے اور انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران پر زیادہ سے زیادہ دباؤ بڑھایا تاکہ ایران کو واشنگٹن کے ساتھ نئے جوہری معاہدے پر راضی ہونے پر مجبور کیا جاسکے۔
ادھر ٹرمپ انتظامیہ کی ایران پر زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی پالیسی نہ صرف  یہ کہ کامیاب نہیں  رہی اور نہ ہی ایران نے ہمت نہیں ہاری بلکہ ایٹمی معاہدہ سے امریکہ کی یکطرفہ طور پر دستبرداری کے ایک سال بعد ایران نے یورپی رکن ممالک کی وعدہ خلافی کے بعد مذکورہ معاہدہ کے تحت اپنے وعدوں کو کم کرنا شروع کردیا۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین