غزہ کو حملوں کی نہیں مدد کی ضرورت ہے:اقوام متحدہ کی نمائندہ

فلسطین میں انسانی حقوق کی نگراں اقوام متحدہ کی خصوصی نمائندہ خاتون نے غزہ کے خلاف صیہونیوں کے فضائی حملوں کو کھلی جارحیت قرار دیا۔

ولایت پورٹل:فلسطین میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کے لیے خصوصی نمائندہ فرانسسکا البانی نے ایک انٹرویو میں غزہ پر اسرائیلی فضائی حملوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا  کہ حالیہ فضائی حملے غیر قانونی، غیر اخلاقی اور غیر ذمہ دارانہ ہیں کیونکہ غزہ میں انسانی صورت حال ایک انسانی تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی ہے جو دہائیوں سے جاری ہے جبکہ اس وقت غزہ کی پٹی کے عوام کو دہشت گردی اور حملوں کی نہیں بلکہ مدد کی ضرورت ہے۔
انہوں نے غزہ کی پٹی کا محاصرہ ختم کرنے، معمول کی زندگی پر واپس آنے اور قابض ریاست کی جارحیت ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ اور عالمی برادری اپنی ذمہ داریاں نبھاتے ہوئے اسرائیل کا محاسبہ یقینی بنائیں،انہوں نے اسرائیل کی حمایت میں امریکی بیان کی مذمت کی جس میں امریکیوں کا کہنا ہے کہ اسرائیل کو اپنے دفاع کا حق حاصل ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہر ایک کو تحفظ ملنا چاہیے، قانونی پہلو کی طرف لوٹنا ضروری ہے جو بین الاقوامی انسانی قانون میں درج ہے اور اپنے دفاع میں طاقت کے استعمال کی اجازت دیتا ہے لہذا اسرائیل یہ دعویٰ نہیں کر سکتا کہ وہ اپنا دفاع کر رہا ہے جبکہ غزہ کے عوام 1967 سے اپنے حقوق سے محروم ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین