Code : 2305 108 Hit

فرانسسی وزیر خارجہ عراقی صدر کے مہمان؛شام سمیت عالمی مسائل پر تبادلہ خیال

عراقی صدر نے یہ بھی واضح کیا کہ جب جب شام میں بحرانی حالات پیدا ہوتے ہیں ان کا سیدھا اثر عراق پر پڑتا ہے لہذا ترک صدر کو کوئی ایسا کام نہیں کرنا چاہیئے جس سے عراق میں دہشتگردی پنپے یا علاقہ کو ایک بار پھر خراب حالات کا سامنا کرنا پڑے۔

ولایت پورٹل: رپورٹ کے مطابق آج عراق کے صدر صالح برہم فرانس کے وزیر خارجہ جان ایو لوڈریان کے میزبان ہیں۔
عراقی صدر اور فرانسسی وزیر خارجہ نے خطہ اور عالمی مسائل پر گفتگو کی اور ساتھ ہی شام کے مسئلہ پر بھی اپنی اپنی رائے کا اظہار کیا۔
عراقی صدر نے شام کے شمالی علاقہ میں ترکی کے حملوں کو ظلم سے تعبیر کرتے ہوئے بیان کیا کہ ترکی کے یہ حملات دہشتگردی کے خلاف عالمی کوششوں کو برباد کردیں گے۔ چنانچہ رجب طیب اردغان کو جلد از جلد اپنی فوج کو واپس بلا لینا چاہیئے۔
نیز عراقی صدر نے یہ بھی واضح کیا کہ جب جب شام میں بحرانی حالات پیدا ہوتے ہیں ان کا سیدھا اثر عراق پر پڑتا ہے لہذا ترک صدر کو کوئی ایسا کام نہیں کرنا چاہیئے جس سے عراق میں دہشتگردی پنپے یا علاقہ کو ایک بار پھر خراب حالات کا سامنا کرنا پڑے۔
عراقی صدر کے بعد فرسیسی وزیر خارجہ نے اپنے عراقی ہم منصب محمد علی الحکیم سے ملاقات کی جہاں دونوں رہنماؤں کے درمیان علاقائی اور عالمی مسائل پر تبادلہ خیال ہوا۔ اس ملاقات کے بعد انہوں نے ایک پریس کانفرنس کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میرے عراق دورے کا مقصد عراق کو ایک بار پھر داعش کے وجود سے آگاہ کرنا ہے جو ترکی کے صدر رجب طیب اردغان کے شام میں بے اذن داخل ہونے ہونے سے پنپنا چاہتے ہیں۔
یاد رہے کہ دو ہفتہ ہوئے ترکی نے شام کے کردوں کو  اپنے لئے احتمالی خطرہ بتلاتے ہوئے بڑی شدت کے ساتھ حملات شروع کئے تھے جنہیں تمام دنیا میں مذمت کی نگاہ سے دیکھا گیا اور خود شام نے بھی ترکی کے ان اقدامات کو شام کی ارضی سالمیت کے لئے خطرہ بتلاتے ہوئے اپنی ناراضگی کا اظہار کیا۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम