جنوبی کوریا کی سابق صدر کو 22 سال قید کی سزا

جنوبی کوریا کی سپریم کورٹ نے اس ملک کی سابق صدر پارک جیون ہائے کو بدعنوانی کے اسکینڈل میں 22سال قید کی سزا سنائی۔

ولایت پورٹل:فرانس نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق جنوبی کوریا کی سپریم کورٹ کی جانب سے اس ملک کی سابق صدر پارک جیون ہائے کو22 سال قید کی سزا سنائے جانے کےفیصلے سے قانونی چارہ جوئی کے اس طویل عمل کو ختم کردیا گیا ہے جس کے لیے سابق صدر کے جانے کے بعد کئی مہینوں تک سڑکوں پر احتجاج جاری ر ہا تھا،یادرہے کہ جنوبی کوریا کی پہلی خاتون صدر منتخب ہونے والی پارک جیون کو 2018 میں بدعنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کے الزام میں 30 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی،تاہم بعد میں ان کی سزا کو نئی اپیلوں اور سماعتوں کے ذریعہ 20 سال قید تک محدود کردیا گیا،رپورٹ کے مطابق آج  ان کا معاملہ دوسری بار سپریم کورٹ میں واپس آیا جہاں 20 سال کی سزا کو برقرار رکھاگیانیزسپریم کورٹ نے سابق صدر کے ذریعہ ادا کیے جانے والے 21.5 ارب ون (16 ملین یورو) کے ہرجانے کو بھی برقرار رکھا، اس کے علاوہ انھیں انتخابی عمل میں دھاندلی کے الزام میں بھی دو سال کی سزا سنائی گئی جس کے بعد وہ بائیس سال جیل میں رہیں گی۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین