Code : 2470 88 Hit

ٹرمپ کے مواخذے کی تحقیقات کی پہلی اعلانیہ سماعت

بدھ کے روز ٹرمپ کے مواخذے کی تحقیقات کی پہلی اعلانیہ سماعت ہوئی ، جس میں یوکرائن گیٹ کیس کے سلسلہ میں نئے انکشافات ہوئے۔

ولایت پورٹل:امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مواخذے کی تحقیقات کو آگے بڑھانے کے لئے پہلی اعلانیہ  سماعت بدھ کو ایوان نمائندگان کی انٹیلی جنس کمیٹی کے ممبروں اورمدعو گواہوں کی موجودگی میں ہوئی،اجلاس میں بطور گواہ مدعو کیے گئے یوکرین کے مسئلہ میں  ٹرمپ کےخصوصی ایلچی  ولیم ٹیلر نے امریکی صدر کے بارے میں نئے انکشاف کیے،انہوں نے یوکرائنی صدر کے ساتھ متنازعہ گفتگو کے اگلے ہی دن ٹرمپ  کی فون پر گفتگو کے بارے میں انکشافات کیے،یاد رہے ٹرمپ نے 7 جولائی کو یوکرین کے صدر سے بات کی تھی،ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی تحقیقات کا اسی متنازعہ گفتگو  سے ہوا، ٹرمپ کے خلاف انکشافات میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے یوکرائن کے اپنے ہم منصب سے امریکی انتخابات میں ان کے حریف جو بائیڈن کے یوکرائن میں کاروبار کے خلاف بدعنوانی کی تحقیقات شروع کرنے کا مطالبہ کیا ،ٹیلر نے کہا کہ ٹیلی فون پر ہونے والی گفتگو کے ایک دن بعد ٹرمپ نے یوروپی یونین میں امریکی سفیر گورڈن سینڈلینڈ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ یوکرین جو بائیڈن کے خلاف بدعنوانی کی تحقیقات کرے گا،انھوں نے مزید کہا کہ گذشتہ جمعہ کو ، میرے دفتر کے ایک ملازم نے مجھے 7 جولائی کو پیش آنے والے واقعات کے بارے میں کافی کچھ بتایا،یہ ملازم یوکرائنی عہدیدار سے ملاقات کے بعد ٹرمپ کو فون کرنے پر سینڈلینڈ کا چشم دید گواہ ہے جس فون پر ٹرمپ کی آواز سنی جو سندرلینڈ سے 'تحقیقات' کے بارے میں پوچھ رہے تھے جس کے جواب میں سینڈلینڈ نے ٹرمپ کو بتایا کہ یوکرینی حکام کارروائی کے لئے تیار ہیں ،کال ختم ہونے کے بعد ، میرے دفتر کے ملازم نے سینڈلینڈ سے پوچھا کہ یوکرین کے بارے میں ٹرمپ کا کیا خیال ہے،انھوں  نے جواب دیا کہ ٹرمپ بائیڈن کی تحقیقات کو زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔




0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम