Code : 2611 51 Hit

سعودی عرب میں مغربی طرز کے موسیقی پروگرام کے خلاف بولنے کےجرم میں 50 سالہ خاتون گرفتار

سعودی حکام نے 50 سالہ خاتون کو سعودی تفریحی پروگراموں پر ایک ویڈیو میں تنقید کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا ہے۔

ولایت پورٹل:سعودی حکام نے وسطی سعودی عرب کے ضلع القصیم میں 50سالہ خاتون کو حراست میں لے لیا ہے جس نے  اپنے فیس بک پیج پر "تفریحی بورڈ" اور "ترکی الشیخ" پر تنقید کی تھی،قابل ذکر ہے کہ ترکی آل شیخ کو محمد بن سلمان کا داہنا ہاتھ شمار کیا جاتا ہے  جو2030کے منصوبہ کو جاری رکھنے کے لیے سعودی رسم ورواج سے ہٹ کرتفریحی پروگرام منعقد کراتا ہے،ٹویٹر پر عودی عرب میں زیر حراست افراد  کے بارے میں لکھنے والے صفحہ معتقلی‌ الرأی نے لکھا ہے کہ سکیورٹی  افسران نے نہایت بدتمیزی اور توہین کرتے ہوئے  ایک درمیانی عمر کی خاتون کو گرفتار کیا اور طے پایا ہے کہ  اس کے الزامات کی تحقیقات "سائبر کرائم قوانین" کے تحت کی جائے گی،مذکورہ  ٹویٹر پیج نے سعودی حکام سے اپیل کی ہے کہ وہ اس خاتون اور دیگر قیدیوں کو رہا کریں اس لیے کہ اپنے عقیدہ کا اظہار کرنا کہیں بھی جرم نہیں ہے،یاد رہے کہ گرفتار ہونے والی خاتون ایک ویڈیو میں سعودی تفریحی بورڈ اور اس کےچیئرمین ترکی آل شیخ سے خطاب کرتے ہوئے کہتی ہیں کہ عربی اور مغربی موسیقی  کےپروگراموں کا انعقاد اور امریکی اور مغربی گلوکاروں کو دعوت دینا دین خدا اوراسلامی شریعت کے خلاف ہے،انہوں نے ویڈیو میں مزید کہا کہ وہ تفریح یا غیر ملکی سرمایہ کو سعودی عرب کی طرف راغب کرنے کی مخالف نہیں ہیں لیکن اس طرح نہیں کہ  جو لوگ یہ پروگرام چلاتے ہیں یا جو لوگ پروگراموں میں شرکت کرتے ہیں وہ خدا کے قہر اور غضب کے شکار ہوجائیں ،قابل ذکر ہے کہ آج تک ، بہت سے علما کو اس طرح کے پروگراموں  کی مخالفت کرنے پر حراست میں لیا جاچکا ہے۔






0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम